Live Updates

انتخابات سے قبل کرونا ویکسین آنے کا امکان نہیں،امریکی دواسازکمپنی

اکتوبر کے آخر میں معلوم ہو جائے گا ہماری تیار کی گئی ویکسین موثر ہے یانہیں،کمپنی سی ای او البرٹ بارلا

بدھ اکتوبر 16:00

انتخابات سے قبل کرونا ویکسین آنے کا امکان نہیں،امریکی دواسازکمپنی
نیویارک(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 21 اکتوبر2020ء) کرونا وائرس کی ویکسین کی تیاری میں مصروفِ عمل امریکی دوا ساز کمپنی فائزرنے اعلان کیا ہے کہ وہ نومبر کے اختتام تک ویکسین کے استعمال کی ہنگامی منظوری لینے کا ارادہ نہیں رکھتی۔ میڈیارپورٹس کے مطابق فائزر کے سی ای او البرٹ بارلا نے ایک بیان میں کہا کہ اکتوبر کے آخر میں کمپنی کو معلوم ہو جائے گا کہ اس کی ویکسین کام کرتی ہے یا نہیں مگر اس کے محفوظ ہونے سے متعلق منظوری نومبر کے آخر سے قبل ممکن نہیں۔

(جاری ہے)

فائزر نے کرونا کی ویکسین کے لیے نیا طریقہ اپنایا ہے۔ بجائے کہ مریضوں کو مردہ یا کمزور وائرس کی خوراک دی جائے، ویکسین میں جینیاتی معلومات موجود ہے۔ جسم اس کو پڑھتا ہے اور اس پر عمل کرتے ہوئے وائرس بناتا ہے جس سے جسم کا مدافعتی نظام لڑتا ہے۔فائزر جرمن بائیوٹک فرم، بائیو این ٹیک کے ساتھ مل کر اس منصوبے پر کام کر رہا ہے۔ کمپنی کی بنائی گئی ویکسین تجرباتی طور پر 40 ہزار افراد کو دی گئی ہے۔کمپنی پر لازم ہے کہ وہ خوراک دینے کے دو ہفتے بعد تک تمام مریضوں پر نظر رکھے۔البرٹا کے مطابق ہم اس منزل کو نومبر کے تیسرے ہفتے تک پا لیں گے۔
کرونا وائرس کی دوسری لہر سے متعلق تازہ ترین معلومات