پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں تیزی ،مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت95ارب38کروڑ6لاکھ روپے بڑھ گئی

بدھ اکتوبر 23:30

پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں تیزی ،مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت95ارب38کروڑ6لاکھ ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 21 اکتوبر2020ء) پاکستان اسٹاک مارکیٹ میںبدھ کو بھی تیزی کا تسلسل برقرار رہا جس کے نتیجے میںکے ایس ای100انڈیکس41ہزار کی نفسیاتی حد کو بحال کرتے ہوئی579.34پوائنٹس کے اضافے سی41535پوائنٹس کی سطح پر جا پہنچاجب کہ 67.45فی صد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے سبب مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت95ارب38کروڑ6لاکھ روپے بڑھ گئی اور حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم منگل کی نسبت34.22فیصد زائد رہا۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کو بھی ٹریڈنگ کے آغاز سے ہی سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص خریداری میں بھرپور دلچسپی نظر آئی جس کے نتیجے میں تیزی رہی اور ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس 41ہزار کی نفسیاتی حد کو عبور کرتے ہوئی41611پوائنٹس کی کی بلند سطح کو چھو گیابعد ازاںپرافٹ ٹیکنگ کی وجہ سے انڈیکس 41600 کی حد برقرار نہ رکھ سکا لیکن تیزی کا رجحان غالب دیکھا گیااورکاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس579.34پوائنٹس کے اضافے سی41535.92پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا جب کہ کے ایس ای30انڈیکس 236.54پوائنٹس کے اضافے سی17518.32پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئر انڈیکس363.34پوائنٹس کے اضافے سی29293.34پوائنٹس پر جا پہنچا۔

(جاری ہے)

کاروباری تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے کا مجموعی حجم75کھرب94ارب42کروڑ34لاکھ روپے سے بڑھ کر75کھرب89ارب80کروڑ40لاکھ روپے ہوگیا۔گزشتہ روز مجموعی طور پر424کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سی286کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 122میں کمی اور16کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔کا۔قیمتوں میں اتار چڑھاوکے اعتبار سے فلپ موریس کے حصص کی قیمت 84.90روپے کے اضافے سی1684.90روپے اورباٹا پاک61.13روپے کے اضافے سی1661.13روپے ہوگئی جب کہ صنوفی ایونٹس کے حصص کی قیمت40.90روپے کی کمی سی779روپے اورگیٹرن انڈسٹریز 39روپے کی کمی سی660روپے ہوگئی۔

متعلقہ عنوان :