این اے 75 ڈسکہ کا الیکشن تحریک انصاف کے حق میں آںے کا امکان

زمینی حقائق بتا رہے ہیں کہ پی ٹی آئی کی قومی اسمبلی میں 2 سیٹیں بڑھ گئی ہیں،ڈسکہ میں پی ٹی آئی کو 8 ہزار ووٹوں کی برتری حاصل ہے۔سینئر صحافی چوہدری غلام حسین کا دعویٰ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان منگل فروری 12:57

این اے 75 ڈسکہ کا الیکشن تحریک انصاف کے حق میں آںے کا امکان
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 23 فروری 2021ء) سینئر صحافی چوہدری غلام حسین کا کہنا ہے کہ قومی اسمبلی میں تحریک انصاف کے دو اور ووٹ بڑھ گئے ہیں۔ایک کے پی کے سے اور ایک ڈسکہ سے جس کے نتائج کا ابھی اعلان نہیں کیا گیا۔اگر رزلٹ کا اعلان ہو جاتا ہے تو پھر پی ٹی آئی بڑے مارجن سے جیت چکی ہے۔جس کے بعد پی ٹی آئی کی قومی اسمبلی میں دو سیٹیں بڑھ جائیں گی۔

اگر 20 پولنگ اسٹیشنز پر دوبار پولنگ ہوتی ہے تو بھی پی ٹی آئی ہی جیتے گی،یہ بات زمینی حقائق سے ثابت ہوئی ہے۔میں کسی دھاندلی کی بات نہیں کر رہا اور نہ ہی کسی فریق کی حمایت کر رہا ہوں،جو میرے پاس اطلاعات ہیں وہ یہی ہیں کہ جو نتائج بن چکے ہیں اس حساب سے پی ٹی آئی 8 ہزار ووٹوں سے جیت چکی ہے۔میری پی ٹی آئی رہنما اعجاز چوہدری سے بات ہوئی ہے انہوں نے کہا ہے کہ ڈسکہ کے نتائج ہمارے حق میں ہیں،بظاہر قومی اسمبلی کی مزید دو سیٹیں پی ٹی آئی کو مل گئی ہیں جو پہلے نہیں تھیں۔

(جاری ہے)

یاد رہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان آج سیالکوٹ کی تحصیل ڈسکہ کے حلقہ این اے75 کے انتخابی نتائج جاری کرنے کے متعلق فیصلہ کرے گا۔ ضمنی انتخاب سے متعلق کیس سماعت کے لیے مقرر ہے اور چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں پانچ رکنی کمیشن سماعت کر رہا ہے۔ واضح رہے کہ این اے 75 ڈسکہ میں ن لیگ کی امیدوار نوشین افتخار اور پی ٹی آئی کے علی اسجد کے درمیان مقابلہ تھا۔

غیر سرکاری اور غیر حتمی نتیجے کے مطابق مسلم لیگ ن کی سیدہ نوشین افتخار کو تحریک انصاف کے امیدوار علی اسجد خان پر برتری حاصل ہے اور حلقے کے 23 پولنگ اسٹیشنز کا نتیجہ آنا ابھی باقی ہے۔ کہ ; مسلم لیگ ن نے حلقے میں دوبارہ انتخاب کروانے کا مطالبہ کر دیا جب کہ حکومت کا کہنا ہے کہ ن لیگ کو 23 پولنگ اسٹیشن پر اعتراض ہے تو وہاں دوبارہ الیکشن کرالے‘ حکومت نے پیشکش کردی ہے۔