ایتھوپیا کے دو ریجنز کے درمیان خون ریز جھڑپوں میں 100 سے زائد افراد ہلاک

جمعرات اپریل 00:27

عدیس ابابا (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 07 اپریل2021ء) ایتھوپیا کے آفار اور صومالی ریجن کے درمیان سرحدی جھڑپوں میں 100 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق ایک علاقائی عہدیدار نے بتایا کہ ایتھیوپیا میں رواں برس جون میں قومی انتخابات سے قبل یہ پرتشدد واقعات ہیں۔آفار خطے کے نائب پولیس کمشنر احمد حمید نے صومالی ریجن کی علاقائی فورسز پر حملے کا الزام عائد کیا۔

انہوں نے بتایا کہ جھڑپیں جمعہ کو شروع ہوئیں اور منگل تک جاری رہیں جس کے نتیجے میں 100 سے زائد افراد ہلاک ہوئے اور ہلاک افراد میں زیادہ تعداد عام شہریوں کی ہے۔دوسری جانب صومالی ریجن کے ایک ترجمان علی بیدیل نے بتایا کہ جمعے کو 25 افراد ہلاک ہوئے تھے اور منگل کو بھی انہی فورسز کے حملے میں نامعلوم تعداد میں شہری ہلاک ہوئے۔

(جاری ہے)

غیرملکی میڈیا رپورٹ کے مطابو آزادانہ طور پر اس بات کی تصدیق نہیں ہوسکی کہ یہ 25 ہلاکتیں بھی 100 ہلاک افراد میں شامل ہیں یا نہیں۔

علاوہ ازیں آفرا ریجن کے احمد کیلوٹ نے کو بتایا کہ صومالی اسپیشل پولیس اور ملیشیا نے ہاروکا کے نام سے منسوب علاقے پر چھاپہ مارا اور مقامی لوگوں پر اندھا دھند فائرنگ کردی۔انہوں نے بتایا کہ 30 سے زائد آفار کے شہری کو ہلاک اور کم از کم 50 مزید افراد زخمی ہوگئے۔ان کا کہنا تھا کہ مقامی برادری نے یہاں بھی چند حملہ آوروں کو پکڑا کر ان کی پٹائی کرڈالی اور اب علاقے میں عارضی طور پر سکون ہے۔دونوں فریقوں نے حملے کی ذمہ داری ایک دوسرے پر عائد کی۔اس سے قبل 2014 میں دونوں ریاستوں کے مابین سرحد کو وفاقی حکومت نے دوبارہ کھڑی کی تھی اور اس وقت ایتھوپین پیپلز انقلابی جمہوری محاذ (ای پی آر ڈی ایف) کی سربراہی میں اتحادی حکومت تھی۔