Live Updates

یو اے ای نے پاکستان سے آنے والے مسافروں پر نئی پابندیاں عائد کر دیں

چارٹرڈ فلائٹس سے آنے والے مسافروں کو 10 روز کے لیے ٹریکنگ ڈیوائسز پہننا ہوں گی، 14 روز قرنطینہ میں گزارنے ہوں گے

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل 15 جون 2021 15:06

یو اے ای نے پاکستان سے آنے والے مسافروں پر نئی پابندیاں عائد کر دیں
دُبئی(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔15 جون2021ء) متحدہ عرب امارات کی جانب سے پاکستان سمیت کئی ممالک سے مسافروں کے آنے پر پابندیاں عائد ہیں۔ تاہم چارٹرڈ فلائٹس کے ذریعے پاکستان، بھارت، نیپال اور یوگنڈا سے مسافروں کی آمد ہو سکتی ہے جس پر بہت زیادہ خرچہ آتا ہے۔ اماراتی سول ایوی ایشن نے پاکستان سمیت دیگر ممالک سے چارٹرڈ فلائٹس سے آنے والے مسافروں پر نئی پابندیاں عائد کر دی ہیں۔

اماراتی جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے جو نیا سرکلر جاری ہوا ہے، اس کے مطابق تمام مسافروں کو امارات پہنچنے کے فوراً بعد 14 روز قرنطینہ میں گزارنے ہوں گے۔ ان افراد کو قرنطینہ کے دوران کم از کم 10روز ٹریکنگ ڈیوائس بھی پہننا ہو گی۔یہ ڈیوائسز شارجہ، ابوظبی اور راس الخیمہ ایئرپورٹ پر اترنے والے مسافروں کودی جا چکی ہیں۔

(جاری ہے)

خلیج ٹائمز کے مطابق پاکستان ، بھارت، نائیجیریا، نیپال اور یوگنڈا سے چارٹرڈ فلائٹس کے ذریعے آنے والے مسافر پہنچتے ساتھ ہی پی سی آر ٹیسٹ کروائیں گے۔

پھر قرنطینہ کے چوتھے روز اور پھر آٹھویں روز بھی پی سی آر ٹیسٹ کروانے لازمی ہوں گے۔ جبکہ ان ممالک سے دُبئی آنے والوں کو 10 روز آئسولیشن میں اور گزارنے کے ساتھ پی سی آر ٹیسٹ بھی کروانا ہوگا۔ واضح رہے کہ اماراتی حکام نے پاکستان سے آنے والی پروازوں پر عائد پابندی کی مُدت میں ایک بار پھر توسیع کر دی ہے۔ چند روز پہلے حکام نے پاکستانی مسافروں کے امارات واپسی پر عائد پابندی کی مُدت میں 30 جون تک کی توسیع کی تھی تاہم اب نئے اعلان کے مطابق یہ پابندی بڑھا کر7جولائی تک کر دی گئی ہے۔

اتحاد ایئر کی ویب سائٹ پر بتایا گیا ہے کہ پاکستان سے امارات واپسی پر عائد پابندی میں 7 جولائی کے بعد مزید توسیع بھی ہو سکتی ہے۔ جس کی وجہ سے پاکستان میں پھنسے ہزاروں اماراتی ویزہ ہولڈرز کی اگلے ایک ماہ تک واپسی نہیں ہو سکے گی۔ اس فیصلے نے ہزاروں پاکستانیوں کو مایوس کر دیا ہے۔ کیونکہ امارات جلد واپسی نہ ہونے سے ان کی نوکریاں خطرے میں پڑ گئی ہیں۔

جبکہ کئی پاکستانیوں کے امارات میں تعلیم کا سلسلہ بھی متاثر ہو رہا ہے۔یو اے ای ایوی ایشن حکام نے 7 جولائی تک توسیع کا جو حکم نامہ جاری کیا ہے اس کے مطابق یہ پابندی پاکستان، بھارت، بنگلہ دیش، نیپال، سری لنکا، نائجیریا اور جنوبی افریقہ سے آنے والے مسافروں پر لگائی گئی ہے۔ امارات کی جانب سے 12 مئی سے پاکستان کے علاوہ بنگلہ دیش، سری لنکا اور نیپال سے آنے والی مسافر پروازوں پر بھی عائد کی گئی تھی۔جس کی وجہ ان ممالک میں کورونا کیسز بڑھنا بتائی گئی تھی۔ 
پاکستان میں کرونا وائرس کی چوتھی لہر سے متعلق تازہ ترین معلومات