قومی مذہب اسلام نہیں رہے گا، بنگلادیش سیکولر ازم کی طرف جانے کیلئے تیار

1972کے سیکولر آئین کی طرف پلٹنے کیلئے نئی ترمیم جلد پارلیمنٹ میں پیش کی جائے گی،حکومتی وزیر مراد حسن

جمعہ 22 اکتوبر 2021 11:40

قومی مذہب اسلام نہیں رہے گا، بنگلادیش سیکولر ازم کی طرف جانے کیلئے ..
ڈھاکا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 22 اکتوبر2021ء) بنگلادیش کی حکمران جماعت ملکی آئین کو سیکولر ازم کی جانب واپس لے جانے کی تیاری کررہی ہے۔

(جاری ہے)

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق حکومتی وزیر مراد حسن نے بتایاکہ1972 کے سیکولر آئین کی طرف پلٹنے کیلئے نئی ترمیم جلد پارلیمنٹ میں پیش کی جائے گی، اس ترمیم کے بغیر کسی رکاوٹ کے ایوان سے منظور ہونے کا امکان ہے اور اس اقدام سے اسلام بنگلادیش کا قومی مذہب نہیں رہے گا۔

رپورٹ کے مطابق بنگلادیش میں شیخ حسینہ کی حکومت نے شیخ مجیب الرحمن کے دیے گئے 1972 کیآئین کو واپس لانے کا فیصلہ کیا ہے۔جونیئر وزیر اطلاعات مراد حسن نے کہا کہ ملک میں 1972 کا آئین واپس لایا جائے گا اور اسلام کو بطور قومی مذہب قبول نہیں کیا جائے گا۔بنگلادیش کی پارلیمنٹ میں حکمران جماعت بنگلادیش عوامی لیگ کو اکثریت حاصل ہے اس لیے اسے اس ترمیم کی منظوری میں کوئی مشکل نہیں ہوگی۔

متعلقہ عنوان :