گندم کے کھیتوں سے جڑی بوٹیوں کو کیمیائی و غیر کیمیائی طریقوں سے ختم کرکے پیداوار میں 42فیصد تک اضافہ کیاجاسکتاہے، محکمہ زراعت فیصل آباد

جمعہ 26 نومبر 2021 12:58

گندم کے کھیتوں سے جڑی بوٹیوں کو کیمیائی و غیر کیمیائی طریقوں سے ختم ..
فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 26 نومبر2021ء) :گندم سمیت دیگر فصلات میں موجود جڑی بوٹیاں فصل کی پیداواری صلاحیت کو بری طرح متاثر کرتی ہیں جس کے باعث فی ایکڑ پیداوار میں بھی کمی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اس لیے کاشتکار جڑی بوٹیوں کی تلفی کو بروقت یقینی بنائیں اور جڑی بوٹیاں ختم کرنے کیلئے داب کا طریقہ استعمال کریں کیونکہ یہ طریقہ انتہائی آسان ترین، سب سے سستا اور مؤثر ہے تاہم جڑی بوٹیوں کو بار ہیرو، گوڈی اور دیگر کیمیائی و غیر کیمیائی طریقوں سے بھی ختم کر کے گندم کی پیداوار میں 14سے 42فیصد تک اضافہ یقینی بنایا جاسکتاہے۔

محکمہ زراعت کے ڈپٹی ڈائریکٹر پلانٹ پروٹیکشن عامر رسول نے بتایاکہ بارہیرو طریقہ بوائی کے بعد بارش کے بعد زمین کے وتر حالت میں آنے پر ختیار کیا جانا چاہئے کیونکہ دوھری بارہیرو چلانے سے جنگلی جئی اور دمبی سٹی جیسی جڑی بوٹیاں تلف ہوجاتی ہیں اور گوڈی کا عمل جڑی بوٹیوں کی تلفی کے علاوہ فصل کی نشوونما کے لیے بھی مفید ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایاکہ جڑی بوٹیوں کو آغاز ہی میں ختم کرنے کے لیے پودوں کے صحیح اگاؤ کے بعد کھرپے یا کسولے کے ذریعے گوڈی کرکے کھیت کو جڑی بوٹیوں سے پاک کیا جاسکتاہے اور کیمیائی طریقہ انسداد کے ذریعے جڑی بوٹیوں کو تلف کرنے کیلئے مختلف کیمیائی زہریں بھی استعمال کی جاسکتی ہیں۔

انہوں نے بتایاکہ گھاس نما یعنی باریک پتوں والی جڑی بوٹیوں کیلئے علیحدہ زہریں استعمال کرنی چاہئیں اور اسی طرح چوڑے پتوں والی جڑی بوٹیوں کیلئے مخصوص زہریں استعمال کرنی چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ ماہرین زراعت اور محکمہ زراعت کے عملہ کی مشاورت سے زہروں کا انتخاب کرنا چاہئے تاکہ جڑی بوٹیوں کی بروقت اور مؤثر تلفی یقینی ہو سکے۔

متعلقہ عنوان :

>