Dil Shikasta - Joke No. 1418

دل شکستہ - لطیفہ نمبر 1418

ایک شخص شراب خانے میں داخل ہوا وہ بہت افسردہ تھا۔ وہاں اسے ایک دوست مل گیا۔ اس نے پوچھا۔” تم اس قدر دل شکستہ کیوں نظر آرہے ہو؟“ ”یار کیا بتاؤں۔ میری ماں کا جولائی میں انتقال ہو گیا وہ میرے لئے دس ہزار روپے چھوڑ گئی۔“ ” بہت افسوس ہوا تمہاری پیاری ماں کے مرنے کا چلو غم کے ساتھ تھوڑی بہت خوشی تو ملی۔“ اس کا دوست کہنے لگا۔ ”پھر اگست میں میرا والد بھی چل بسا۔ اس نے میرے لئے بیس ہزار کا ترکہ چھوڑا۔ پھر ویسا ہی ملا جلا صدمہ !“ دوست نے ہمدردی کا اظہار کیا۔ دوسرے نے اپنی بات جاری رکھی۔ ” ایک اور حادثہ یہ ہوا کہ میری مالدار خالہ بھی گذشتہ ماہ چل بسی اورمیرے لئے پچاس ہزار روپے چھوڑ گئی۔“ ”بہت صدمے کی بات ہے۔“ دوست نے پھر چھوٹ موٹ کا اظہار ہمددری کیا۔ ”پراب تم کیوں اداس ہو؟“ ”وہ اس لئے کہ اس مہینے ا بھی تک کچھ نہیں ہوا“

مزید لطیفے

اناڑی ڈرائیور

anari driver

کنجوس باپ

Kanjoos baap

بیٹا ماں سے

Beta Maa Se

ماسٹر صاحب فیل؟

master sahib fail ?

لیڈی مونٹ بیٹن

lady mountbatten

ڈیپارٹمنٹل

departmental

لکڑی کا ہاتھ

Lakdi Ka Hath

اوور ٹائم

Over Time

چابی

Chabi

شکایت کا خط

Shikayat ka khat

استاد شاگرد سے

Ustad Shagird se

استاد شاگرد سے

Ustad shagid sai

Your Thoughts and Comments