پنجاب حکومت نے صوبے کو پولیو سے پاک قرار دے دیا

اس سال پنجاب بھر میں تمام شہروں کے سیوریج کے نمونے پولیو فری نکلے ہیں اور صوبے میں پولیو کا کوئی بھی نیا کیس رپورٹ نہیں ہوا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار

Sajid Ali ساجد علی اتوار 28 نومبر 2021 11:21

پنجاب حکومت نے صوبے کو پولیو سے پاک قرار دے دیا
لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 28 نومبر 2021ء ) پنجاب حکومت نے صوبے کو پولیو سے پاک قرار دے دیا ‘ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کہتے ہیں کہ اس سال پنجاب بھر میں تمام شہروں کے سیوریج کے نمونے پولیو فری نکلے ہیں اور صوبے میں پولیو کا کوئی بھی نیا کیس رپورٹ نہیں ہوا۔ تفصیلات کے مطابق اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کو پولیو فری بنانے کے لیے ویکسینیشن کا عمل تسلسل سے جاری ہے اور انشاء اللہ ہم جلد اس مرض کا پاکستان سے مکمل طور پر خاتمہ کر دیں گے ۔

علاوہ ازیں محکمہ صحت نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کئی شہروں میں سیوریج واٹر کے نمونے پولیو فری نکلے ہیں ، اجلاس میں وزیراعلیٰ نے پنجاب میں ایئر ایمبولینس سروس کے آغاز کیلئے سمری کی منظوری بھی دی ، ریسکیو 1122 کا ادارہ ائیر ایمبولینس سروس شروع کرنے کے لئے قواعد وضوابط کے تحت ٹینڈر جاری کرے گا۔

(جاری ہے)

وزیراعلیٰ نے سروس کے اجراء کے لئے کارروائی جلد مکمل کرنے، پائلٹ اسٹاف کی دستیابی کا عمل بھی جلد مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ایئرایمبولینس میں پیرا میڈیکس، ریسکیور اور جان بچانے کے لئے تمام ضروری آلات میسر ہوں گے۔

ایئر ایمبولینس دور دراز علاقوں سے مریضوں کو ٹیچنگ اور اسپیشلائزڈ ہسپتالوں میں منتقل کرے گی۔ دوسری طرف وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا ہے کہ سات ماہ گزر گئے ملک میں پولیو کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا ، جس کا مطلب ہے کہ پاکستان میں پولیو کے کیسز بتدریج کم ہورہے ہیں ، شہری انسداد پولیو ٹیم سے تعاون کریں اور بچوں کو پولیو کے قطرے ضرور پلائیں جو کہ نقصان دہ بالکل بھی نہیں بلکہ محفوظ ہیں۔

پولیو مہم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت پولیو کے خاتمے کیلئے پر عزم ہے ، پولیو کے خاتمے کیلئے موثر اقدامات کو یقینی بنایا ہے ، عوام پولیو سے بچاؤ کے قطروں کے حوالے سے بے بنیاد خبروں پر توجہ نہ دیں ، والدین سے التماس ہے کہ وہ بچوں کو پولیو قطرے ضرور پلوائیں ، اس حوالے سے تمام مکتب فکر سے پولیو مہم میں اپنا کردار ادا کرنے کی بھی اپیل ہے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments

>