تنخواہوں میں 10فیصد اضافہ نامنظور،کل پارلیمنٹ ہاوس کے سامنے بھر پور احتجاج کیا جائے گا ‘ ٹیچرز یونین

پیر اپریل 19:32

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 اپریل2018ء) پنجاب بھر سے اساتذہ کل (منگل )17 اپریل کو پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی صدر چوہدری محمد سرفراز اور چئیرمین سید سجاد اکبر کاظمی کی قیادت میں متحدہ محاذ اساتذہ پاکستان کی کال پر بڑھتی ہوئی مہنگائی اور پاکستان میں یکساں نظام تعلیم و اساتذہ کے یکساں سروس سٹرکچرکے حصول کیلئے پریس کلب اسلام آباد سے پارلیمنٹ ہائوس تک مارچ کریں گے اور دھرنا دیں گے۔

حسب روایت 10%تنخواہوں میں اضافہ اونٹ کے منہ میں زیرے والی بات ہے۔

(جاری ہے)

بجٹ سے قبل ہی اشیا خوردنوش کی قیمتوں میں ہوش ربا اضافہ ہو چکا ہے جبکہ بجٹ کے بعد ان کی قیمتوں میں مزیداضافہ ہوگا۔ادویات کی قیمتوں میں اضافے سے علاج معالجہ بھی مہنگا ہو گیا ہے ۔2008ء سے ہائوس رینٹ منجمد ہے جس سے ایک کمرہ بھی کرایہ پر نہیں ملتا ۔خیبر پختونخواہ و دیگر صوبوں کے اساتذہ کو ٹائم سکیل ملنے پر اساتذہ پنجاب میں بے چینی و اضطراب بڑ ھ رہی ہے۔

چونکہ پنجاب میں ٹیچرز پیکیج کا بھی خاتمہ کردیا گیا ہے ۔لہذا وزیراعظم پاکستان اور وزیر خزانہ سے مطالبہ ہے کہ ملازمین کی تنخواہ میں ایڈہاک ریلیف ضم کرکے 50%اضافہ کیا جائے ۔منجمدہائوس رینٹ کو موجودہ سکیلوں کے مطابق دیا جائے ۔میڈیکل اور کنوینس الائونس میں کم ازکم 50%اضافہ کیا جائے۔

متعلقہ عنوان :