بنگلہ دیش لیگ میں غیرملکی کرکٹرزمتعلق پالیسی تبدیل کردی گئی

بی پی ایل حکام نے 2017 میں کی گئی تبدیلی کا فیصلہ واپس لیتے ہوئے ہر فرنچائزڈکی پلیئنگ الیون میں غیر ملکی کھلاڑیوں کی تعداد کم کرکے واپس چار کردی

جمعرات اپریل 17:42

بنگلہ دیش لیگ میں غیرملکی کرکٹرزمتعلق پالیسی تبدیل کردی گئی
ڈھاکہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) بنگلہ دیش پریمیئرلیگ کے منتظمین نے گزشتہ ایڈیشن سے سبق سیکھتے ہوئے آنے والے ایڈیشن میں غیرملکی کرکٹرز کے حوالے سے پالیسی تبدیل کردی گئی ہے ۔بی پی ایل حکام نے 2017 میں کی گئی تبدیلی کا فیصلہ واپس لیتے ہوئے ہر فرنچائزڈکی پلیئنگ الیون میں غیر کھلاڑیوں کی تعداد کم کرکے واپس چار کردی ہے جبکہ اس سے قبل گزشتہ سیزن میں ہر ٹیم کو پانچ غیرملکی کھلاڑیوں کو کھلانے کی اجازت تھی۔

اس کے علاوہ بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے بی پی ایل گورننگ کونسل کے اس متفقہ فیصلے کو بھی قبول کرلیاہے ، وہ 2017 کے اس اسکواڈ میں سے چار کھلاڑی(ملکی یا غیرملکی2018) کے سیزن میں بھی برقرار رکھ سکتے ہیں۔واضح رہے کہ 2017 کے علاوہ بی پی ایل کے دیگر سبھی ایڈیشنز میں دنیا بھر میں کھیلی جانے والی لیگز کی طرح ایک میچ میں زیادہ سے زیادہ چار غیرملکی کھلاڑی کھلانے کی اجازت دی لیکن گزشتہ سال یہ حد بڑھا کر پانچ پلیئرزتک کردی گئی تھی۔

(جاری ہے)

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈکے صدر نظم الحسن نے کہاہے کہ ابھی ٹورنامنٹ میں پانچ ماہ سے زائد وقت پڑاہے ۔اس لئے ٹیموں کے پاس اپنے اسکواڈ تشکیل دینے کیلئے مناسب وقت ہے۔اس لئے ہم نے ہر فرنچائزڈکو گزشتہ ایڈیشن کے اسکواڈز میں سے صرف چار کھلاڑی ہی برقرار رہنے کی اجازت دی ہے۔واضح رہے کہ بی پی ایل کا 2018 کا ایڈیشن یکم یا پانچ اکتوبر کو شروع ہونے کا امکان ہے ۔اس حوالے سے نومبر میں حتمی فیصلہ اور شیڈول جاری کیا جائے تاکہ اس بات کی یقین دہانی ہوسکے کہ ٹورنامنٹ کا شیڈول بنگلہ دیش میں ہونے والے عام انتخابات کے شیڈول سے متصادم نہ ہو۔۔بنگلہ دیش پریمیئرلیگ میں کئی پاکستانی اسٹارزکرکٹرز حصہ لیتے ہیں جن میں شاہد آفریدی، محمد عامر، محمد حفیظ، بابراعظم بھی شامل ہیں۔

متعلقہ عنوان :