ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سکھر کا شہر کے 18مختلف پارکوں کا ہنگامی دورہ

جمعرات اپریل 23:53

سکھر۔19اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سکھر امجد علی بوہیو نے سندھ ہائی کورٹ کے حکم پر سکھر میں قائم پارکوں میں ناجائز تجاوزات کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر سکھر رحیم بخش میتلو، ڈپٹی مئیر طارق چوہان اور دیگر متعلقہ افسران کے ہمراہ شہر کے 18مختلف پارکوں کا ہنگامی دورہ کیا۔ دورے کے دوران انہوں نے پارکوں کے اطراف غیر قانونی تجاوزات اور قبضوں کے خلاف ڈپٹی کمشنر اور ڈپٹی مئیر کو سختی سے ہدایت کی کہ وہ فوری طور پر تمام پارکوں کی پیمائش کراکر اصل پیمائش کے حساب سے ناجائز تجاوزات کو فوری طور پر ختم کرائیں۔

انہوں نے میونسپل اسٹیڈیم میں نصب ناقص واٹر ٹینکس کو فوری ختم کرنے اور متعلقہ ٹھیکیدار کا لائسنس فوری طور پر منسوخ کرنے کا حکم بھی جاری کیا جبکہ جیم خانہ کی پیمائش کی رپورٹ بھی طلب کر لی ۔

(جاری ہے)

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سکھر امجد علی بوہیو نے ٹیک چند پارک میں گندگی پھینکنے کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ڈی ایس ریلوے کو پابند کیا کہ پارک کی صفائی کرائیں اور کچرا پھینکنے والے رہائشیوں کو نوٹس دے کر جرمانہ عائد کیا جائے ۔

دورے کے دوران انہوں نے ہدایت کی کہ منزل گاہ گراؤنڈ پر بغیر اجازت نامے کے دھاگے بنانیوالوں سے گراؤنڈ خالی کرایا جائے اور گراؤنڈ کی پیمائش کے بعد رپورٹ جمع کرائی جائے ۔ انہوں نے ڈی سی اور ایس ایس پی سکھر کو ہدایت کی کہ نمائش گراؤنڈ میں قائم شدہ سرکاری دفاتر کو قبضہ کرنے والوں سے فوری طور پر خالی کرایا جائے ۔ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سکھر نے ایس ڈی ایم آفس کے سامنے قائم کردہ پارک کو ختم کر کے اس کی جگہ پارکنگ بنانے کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے میونسپل افسران کو ہدایت کی کہ پارک کو اس کی اصل شکل میں لایا جائے ، جبکہ ایس پی سٹی سکھر کو بھی ہدایت کی کہ وہ اس جگہ نو پارکنگ کا بورڈ آویزاں کرائیں تا کہ آئندہ کے لئے پارکنگ پر پابندی لاگو کی جاسکے، عملدرآمد نہ ہونے کی صورت میں ٹریفک اہلکاروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے ۔

انہوں نے میونسپل آفس میں قائم شدہ جوہر پارک کو ختم کر کے اس کی جگہ مئیر آفس قائم کرنے کا بھی سخت نوٹس لیا اور ڈپٹی مئیر طارق چوہان سے معلومات لیتے ہوئے بازپرس کی کہ مذکورہ جگہ پر آفس قائم کرنے کی منظوری کس نے دی اس حوالے سے تفصیلی رپورٹ جلد فراہم کی جائے۔ جبکہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے لیڈیز اینڈ چلڈرن پارک میں قائم کردہ ہل ٹاپ باربی کیو کے بارے میں استفسار کرتے ہوئے کہا کہ جب بار بی کیو کی الاٹمنٹ منسوخ کی جا چکی ہے تو یہ کیسے چل رہا ہے ، اس کو فوری طور پر ختم کیا جائے۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سکھر امجد علی بوہیو نے نیو پنڈ پارک کے دورے کے دوران استفسار کرتے ہوئے کہا کہ 34ایکڑ پر مشتمل نیو پنڈ پارک کو صرف 3ایکڑ پر کس نے محدود کیا باقی 31ایکڑ اراضی کے متعلق تفصیلی رپورٹ تین دن کے اندر پیش کی جائے ۔ انہوں نے ڈپٹی مئیر سکھر اور ایکسین میونسپل سکھر کو سختی سے ہدایت کی کہ ڈی سی آفس کے قریب قائم فاطمہ چلڈرن پارک کو تین مہینے کے اندر مکمل کیا جائے اس ضمن میں کو ئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔

متعلقہ عنوان :