نٹرنیشنل ڈیسک *

افغانستان؛طالبان بدخشاں ضلع پر مکمل طور پر قابض ہونے میں کامیاب شدت پسندوں اور سکیورٹی فورسز کے مابین کئی دن تک شدید لڑائی ہوئی،بروقت اسلحہ سپلائی نہ پہنچنے پر طالبان اپنے گھناؤنے مقصد میں کامیاب ہوئے،ترجمان

ہفتہ مئی 15:10

کابل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) افغان حکام نے تصدیق کی ہے کہ طالبان نے افغانستان کے شمالی صوبے بدخشاں کے ضلع کوہستان پر مکمل قبضہ کرلیا ہے۔ہفتہ کو ترجمان ضلع بدخشاں ثناء اللہ روحانی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ضلع کوہستان پر قبضہ حاصل کرنے کیلئے طالبان اور افغان سکیورٹی فورسز کے مابین کئی دن تک شدید لڑائی جاری رہی،تاہم طالبان اس خوفناک لڑائی میں کامیابی حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔

انہوں نے کہا کہ سکیورٹی فورسز کو نئی کمک اور اسلحہ کی سپلائی بروقت نہ پہنچ سکی جس کے نتیجے میں ضلع کوہستان پر طالبان کنٹرول حاصل کرنے میں مکمل طور پر کامیاب ہو گئے ہیںاور ضلعی پولیس ہیڈ کواٹر کو پسپائی اختیار کرنی پڑھی۔ترجمان پولیس کے مطابق سکیورٹی فورسز نے ضلع تیشکان میں متعدد چیک پوسٹیں طالبان کی پیش قدمی کے باعث خالی کردی ہیں اور علاقے میں دباؤ بھی بڑھ رہا ہے۔

(جاری ہے)

دوسری جانب ترجمان طالبان ذبیع اللہ مجاہد نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ضلع کوہستان میں جھڑپ کے دوران سکیورٹی فورسز کے 15 اہلکار جبکہ طالبان کے 2 جنگجو ہلاک ہوئے،سکیورٹی فورسز کے قبضے سے 3پک اپ ٹرک اور بڑی مقدار میں اسلحہ بارود حاصل کرلیا گیا،کوہستان پر طالبان کا کنٹرول ہونے سے دیگر 3اضلاع پربھی اثرورسوخ قائم ہو گیا ہے۔واضح رہے کہ افغانستان کے شمالی صوبے بدخشاں کی سرحدیں تاجکستان، چین اور پاکستان سے ملتی ہیں تاہم طالبان کیلئے یہ صوبہ ماضی میں کبھی دلچسپی کا باعث نہیں رہا تھا،،طالبان نے موسم بہار کیساتھ ہی افغان اور امریکی فوجیوں کیخلاف نئے حملوں کے آغاز کا اعلان کیا تھا اور طالبان کی جانب سے متعدد حملوں کے پیش نظر اکتوبر میں پارلیمانی اور ضلعی کونسل کے انتخابات ملتوی ہونے کا خدشہ ہے۔