پاکستان کا متنازع کشن گنگا ڈیم کیخلاف عالمی بینک سے رجوع کرنے کا فیصلہ

معاہدے کی حفاظت کے لیے عالمی بینک کے صدر سے بات کریں گے ،ْ اعزاز احمد چوہدری امریکی سفارتخانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی پر تحفظات ہیں ،ْاسرائیل القدس پر بین الاقوامی معاہدوں کی پاسداری کرے ،ْپاکستانی سفیر کا مطالبہ

اتوار مئی 13:30

پاکستان کا متنازع کشن گنگا ڈیم کیخلاف عالمی بینک سے رجوع کرنے کا فیصلہ
واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) مقبوضہ کشمیر میں متنازع کشن گنگا ڈیم کے خلاف پاکستان نے عالمی بینک سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے امریکا میں پاکستان کے سفیر اعزاز چوہدری نے کہا کہ عالمی بینک کے صدر سے سندھ طاس معاہدے،کشن گنگا اور رتلے سمیت دیگر بھارتی منصوبوں کا معاملہ اٹھائیں گے ۔اعزاز چوہدری نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے متنازع ڈیم پر بھارت کو کئی تجاویز دی گئیں تاہم پڑوسی ملک نے یکطرفہ طور پر منصوبوں پر کام جاری رکھا جبکہ بھارت کو بتایا گیا تھا کہ ڈیم کا ڈیزائن تبدیل کردیں جس کے بعد سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی نہیں ہوگی۔

پاکستانی وفد3روزہ قیام میں ورلڈ بینک کے صدر سے ملاقات کرے گا، وفد کے ایجنڈے میں بھارت کی آبی جارحیت پر بھی گفت گو ہوگی، پاکستانی وفد بھارت کی جانب سے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی پر گفتگو کرے گا۔

(جاری ہے)

پاکستانی سفیر نے کہا کہ معاہدے کی حفاظت کے لیے عالمی بینک کے صدر سے بات کریں گے اور انہیں بتائیں گے کہ بھارت کی جانب سے معاہدوں کی پاسداری نہ کرنا غلط بات ہوگی۔

پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ امریکی سفارتخانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی پر پاکستان کو تحفظات ہیں۔امریکا میں تقریب سے خطاب میں پاکستانی سفیر اعزاز چوہدری کا کہنا تھا کہ اسرائیل القدس پر بین الاقوامی معاہدوں کی پاسداری کرے، پاکستان آزاد مستحکم فلسطین کی حمایت کرتا ہے، اس موقع پر انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں پاکستانی سفارت خانے مسئلہ فلسطین اجاگر کرنے میں کردار ادا کریں۔اعزاز چوہدری نے کہا کہ امریکا اسرائیلی قبضے کو ختم کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کرے