اسلام آباد ہائی کورٹ ، نواز شریف کے ممبئی حملوں کے حوالے سے بیان پر وفاق کی مزید وقت دینے کی استدعا مسترد

جمعرات مئی 16:50

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق نواز شریف کے ممبئی حملوں کے حوالے سے بیان پر وفاق کی مزید وقت دینے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے مزید سماعت5جون تک کیلئے ملتوی کردی۔گزشتہ روز اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق پر مشتمل سنگل رکنی بنچ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے ممبئی حملوں کے حوالے سے حالیہ بیان کے خلاف دائر درخواست پر سماعت کی۔

فاصل بنچ نے جب سماعت شروع کی تو درخواست رائے تجمل ایڈووکیٹ نے عدالت عالیہ اسلام آباد سے استدعا کی کہ الطاف حسین بانی ایم کیو ایم کیس میں لاہور ہائیکورٹ نے پابندی عائد کی لہٰذا پیمرا کو نوازشریف کی تقاریر نشر کرنے سے روکا جائے اور ایف آئی اے کو ریاست کے خلاف بیان بازی پر سابق وزیراعظم کے خلاف کارروائی کی ہدایت کی جائے۔

(جاری ہے)

دلائل دیتے ہوئے درخواست گزار نے عدالت کو مزید بتایا کہ یہ آئین شکنی کا بھی معاملہ ہے،،نوازشریف وطن سے غداری کے مرتکب ہوئے ہیں۔

بعد ازاں عدالت نے وفاقی حکومت کی جواب داخل کروانے کیلئے مزید مہلت دینے کی استدعا منظور کرتے ہوئے پیمرا اور پی ٹی اے کو دوباری نوٹس جاری کرنے کی ہدایت کی اور مزید سماعت 5جون تک کیلئے ملتوی کردی۔واضح رہے کہ درخواست گزار کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے پیمرا اور پی ٹی اے کو فریق بنایا گیا ہے جبکہ ایف آئی اے حکام نے اپنا جواب داخل کروا دیا ہی۔