حلقہ بندیاں روز روز بدلتی رہیں تو الیکشن کی تاریخ بدل جانے کا خدشہ ہے ،

ابھی تو صوبائی حکومتیں ہی نہیں بنیں ،حلقہ بندیاں ہی فائنل نہیں تو الیکشن میں جان کیسے پڑسکتی ہے،ایک دن ایک حلقے میں ووٹ مانگنے جاتے ہیں تودوسرے دن پتہ چلتاہے کہ وہ ہمارا حلقہ ہی نہیں رہا عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشیداحمدکا افطار جلسہ سے خطاب

جمعرات مئی 23:16

حلقہ بندیاں روز روز بدلتی رہیں تو الیکشن کی تاریخ بدل جانے کا خدشہ ہے ..
ْراولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشیداحمد نے کہاہے کہ ابھی تو صوبائی حکومتیں ہی نہیں بنیں اورحلقہ بندیاں ہی فائنل نہیں تو الیکشن میں جان کیسے پڑسکتی ہے،اگرحلقہ بندیاں روز روز بدلتی رہیں توخطرہ ہے کہ الیکشن کی تاریخ ہی نہ بدل جائے ،ایک دن ایک حلقے میں ووٹ مانگنے جاتے ہیں تودوسرے دن پتہ چلتاہے کہ وہ ہمارا حلقہ ہی نہیں رہا۔

ووٹرلسٹیں ہی نایاب ہیں اورالیکشن کمیشن کے پاس امیدواروں کیلئے ووٹر لسٹوں کی کاپیاں ہی نہیں ہیں۔ملک کی موجودہ معاشی صورتحال اور بجلی کی لوڈشیڈنگ میں انتخابی مہم چلانا کوئی آسان کام نہیں ہے۔ وہ جمعرات کو یونین کونسل 79رحمت آباد راولپنڈی میں افطار جلسہ سے خطاب کر رہے تھے ۔ شیخ رشید احمد نے کہاکہ وہ راولپنڈی سے قومی اسمبلی کے دو حلقوں این اے 60اور 62سے عمران خان کے اتحاد کیساتھ’’ قلم دوات‘‘ کے انتخابی نشان پر الیکشن میں حصہ لیں گے جبکہ وہ پہلے این اے 61میں عمران خان کیلئے ’’بلے‘‘کے نشان پرووٹ مانگیں گے اور بعد میں اپنے لئے ووٹ مانگنے جائیں گے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ ابھی تک نگران صوبائی حکومتیں ہی نہیں بن سکیں اور حلقہ بندیاں ہی مکمل نہیں ہوسکیں تو ان حالات میںالیکشن میں جان کیسے پڑسکتی ہی انہوں نے کہاکہ ہر روز حلقہ بندیوں میں ردوبدل ہو رہاہے جس کی وجہ سے خطرہ ہے الیکشن کی تاریخ بھی تبدیل ہوسکتی ہے، ایک دن ایک حلقے سے ووٹ مانگنے جائیں اوردوسرے دن دوسرے حلقے سے ووٹ مانگنے جائیں تو بڑی نامناسب بات لگتی ہے، الیکشن شیڈول سے پہلے ملک بھر میں قومی و صوبائی اسمبلیوں کی حتمی حلقہ بندیاں ضروری ہیں تاکہ امیدوار اورووٹر دونوں خراب نہ ہوں ۔

شیخ رشید نے کہاکہ ابھی تک تو الیکشن کمیشن کے پاس ووٹر لسٹیں ہی نایاب ہیں اور صرف دو، دو کاپیاں بنائی گئی ہیں جبکہ ایک ایک حلقے میں بائیس، بائیس امیدوار ہیں جنہیں ابھی اپنے حلقے ہی ووٹر فہرستیں ہی دستیاب نہیں۔ ملک کی موجودہ معاشی صورتحال اور بجلی کی بڑھتی ہوئی لوڈشیڈنگ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ایسی صورتحال میں انتخابی مہم چلانا کوئی آسان کام نہیں، تاہم جب بھی الیکشن ہوئے انشاء اللہ ہم اس بار ریکارڈ ساز ووٹ لے کر کلین سویپ کریں گے اورراولپنڈی میں حکمران جماعت کو تاریخی شکست سے دوچار کریں گے۔