ضلع اٹک میں میجر گروپ کی کامیابی یقینی ہے،ملک حمید اکبر خان

اتوار جون 21:00

اٹک (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) ضلع اٹک میں ہونے والا میجر گروپ کا جلسہ اور اس جلسہ گاہ کے اندار اورباہر عوام کا ٹھاٹھیں مارتا سمندر چیئرمین تحریک انصاف عمران خان اپنی آنکھوں سے دیکھ چکے ہیں جبکہ اٹک میں چند روز بیشتر مسلم لیگ ( ن ) کا ناکام ترین جلسہ اس بات کا عکاس ہے کہ اٹک میں اب عوام کسی اور سیاسی کو ماننے کو تیا ر نہیں ہم پی ٹی آئی کی اعلیٰ ترین قیادت کو واشگاف الفاظ میں یہ بتا دینا چاہتے ہیں کہ اس حلقہ میں زمینی حقائق و عوامی منشائ صرف میجر طاہر صادق کو پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑتے دیکھنا چاہتے ہیں اور پارٹی کی کامیابی بھی صر ف اسی صورت میں ممکن ہے بصورت دیگراین اے 55پر مسلم لیگ ( ن ) کی جیت کی تمام تر ذمہ داری غلط فیصلوں کے باعث ہی ہوگی اور پارٹی کارکنان نہایت مایوسی کا شکار ہونگے جس کا شاخسانہ غیر متوقع الیکشن رزلٹ کی صورت میں نکلے گا ان خیالات کا اظہارامیدوار پنجاب اسمبلی و ممبر ضلع کونسل اٹک ملک حمید اکبر خان ،امیدوار پنجاب اسمبلی حاجی محمد اکرم خان، کونسلران بلدیہ اٹک شیخ نثار احمد،رانا افسر علی، سجاد سرور، لیڈی کونسلروصدروومن وینگ تحریک انصاف ضلع اٹک امینہ نشاط جعفری ، چیئرمین یونین کونسل گولڑہ ملک عزیز الرحمن، وائس چیئرمین قاضی غلام مرتضیٰ،چیئرمین یونین کونسل مرزا سید جمشید افتخار شاہ،وائس چیئرمین ملک فیاست خان، چیئرمین یونین کونسل بو لیا نوال ملک منور خان، وائس چیئرمین محمد صالح،چیئرمین یونین کونسل اکھوڑی سردار امجد خان، وائس چیئرمین ملک محمد اکرم خان،چیئرمین یونین کونسل شیں باغ ملک شمیم خان، وائس چیئرمین ملک محمد سعید اکبر خان ، چیئر مین یونین کونسل سرگ سالار سردار وسیم امتیازایڈووکیٹ اور اٹک کی دیگر سرکردہ شخصیات جن میں سردار ہمایوں اکبر خان ڈھوک شرفا، زاہد خان اکھوڑی،سردار شبیر خان سرگ سالار، ڈاکٹر ممتاز خان مرزا، حاجی لال خان بولیا نوال، ملک لیاقت گولڑہ، مبارک شاہ کامرہ، منظور علی اور نیاز خان حاجی شاہ نے ایک اہم میٹینگ میں کیا انہوں نے کہا کہ 2013 ئ کے عام انتخابات میں آزاد حیثیت میں 52000سے زائد ووٹ لینا ہی میجر طاہر صادق کا میرٹ ہے ایک ایسا شخص جسے مئی 2013کے بعد اب اس وقت ضلع اٹک کی حدود میں تب دیکھاگیا جب الیکشن ہونے جارہے ہیںکس بنیاد اور کس اہلیت پر این اے 55کا اہل امیدوار ہو سکتا ہے میجر طاہر صادق نے تحصیل اٹک کی 10میں سے 7یونین کونسلوں اور مسلم لیگ ( ن ) کی مرکز اور صوبہ میں بااختیار حکومتوں کے زیر سایہ ہونے والے بلدیاتی انتخابات میں جیت کر یہ ثابت کر دیا ہے کہ اصل عوامی طاقت و تائید کس کے پاس ہے۔