پیپلزپارٹی کے رہنماوں کے اقامے اور انتخابات میں نااہلی سے متعلق درخواست پر الیکشن کمیشن کو 25جولائی تک جواب جمع کرانے کا حکم

منگل جون 17:15

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جون2018ء) سندھ ہائی کورٹ نے فریال تالپور سمیت پاکستان پیپلزپارٹی کے دیگر رہنماوں کے اقامے اور انتخابات میں نااہلی سے متعلق درخواست پر الیکشن کمیشن کو 25جولائی تک جواب جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ہے ۔منگل کو سندھ ہائیکورٹ میں فریال تالپور سمیت سابق صوبائی وزرا ناصر حسین شاہ، منظور وسان سہیل انورسیال، سردار نواب غیبی چانڈیو کے اقامے او رانتخابات میں نااہلی سے متعلق درخواستوں کی سماعت ہوئی۔

عدالت میں سابق صوبائی وزیر ناصر حسین شاہ اور سردار غیبی نواب چانڈیو کے وکیل نے جواب جمع کرادیا ۔جواب میں بتایا گیا کہ ناصر حسین شاہ نے 2012 میں اقامہ ترک کردیا تھا۔ ناصر حسین شاہ عام انتخابات میں بھی امیدوار ہیں۔

(جاری ہے)

اس لیے کیس کو فوری سنا جائے ۔۔عدالت کا کہنا تھا کہ پہلے تمام فریقین نے کا جواب آنے دیں پھر سب کو تفصیل سے سنیں گے۔ عدالت میں فریال تالپور کے وکیل فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ عدالت کا نوٹس نہیں ملا اس لیے جواب جمع کرانے کے لیے وقت دیا جائے۔

عدالت میں پانچوں درخواستوں پر وفاقی وصوبائی حکومت اور الیکشن کمیشن کی جانب سے بھی مہلت طلب کی گئی ۔۔عدالت نے الیکشن کمیشن کودیگرکو پچیس جولائی تک مفصل جواب جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ۔واضح رہے کہ فریال پور کے خلاف درخواست میں موقف اختیارکیا گیا تھا کہ فریال تالپور نے 2002میں صاحبزادی عائشہ کے نام پر دبئی میں کمپنی قائم کی فریال تالپور نے رقم دبئی منتقل کرنے کی تفصیلات الیکشن کمیشن سے چھپائی جھوٹا بیان حلفی جمع کرانے پر فریال تالپور صادق اور امین نہیں رہیں۔