عوامی مطالبہ پر ملک کی تمام بڑی دینی جماعتیں متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے متحد ہو چکی ہیں ، مولانا فضل الرحمن

عمران خان کا بلین ٹری منصوبہ کرپشن کے سوا کچھ نہیں تھا ،صوبائی حکومت کی ناکامی کا اعتراف عمران خود کرچکے ںاب مرکزی حکومت کیلئے پر تول رہے ہیں، امیر متحدہ مجلس عمل کا تقریب سے خطاب

جمعرات جون 21:20

ٹانک(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جون2018ء) جے یو آئی کے سربراہ اور متحدہ مجلس عمل کے مرکزی امیر مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ عوامی مطالبہ پر ملک کی تمام بڑی دینی جماعتیں متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے متحد ہو چکی ہیں ،عمران خان کا بلین ٹری منصوبہ کرپشن کے سوا کچھ نہیں تھا ،صوبائی حکومت کی ناکامی کا اعتراف عمران خود کرچکے ںاب مرکزی حکومت کیلئے پر تول رہے ہیں،پاکستان میں مذ ہب سے بے زار بعض قوتیں ایسی ہیں جو اسلام کو مانتی ہیں ،اسلام کا پرچار کرتی ہیں لیکن وہ اپنی ذات کی حد تک مسلمان ہیں وہ ملک میں فحاشی اور عریانی کو پھیلانے کا باعث بن رہی ہیںوہ چاہتی ہیں کہ ملکی معیشت اور کاروبار سود کی بنیاد پر ہو ،شراب اور فحاشی پر پابندی نہ ہو،وہ قوتیں ان باتوں کو روشن خیالی تصور کرتی ہیںاگر ان کے سامنے دین اسلام اور قرآن کی روشنی میں بات کی جائے تو وہ اس کورجعت پسندی سمجھتے ہیں۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روز ٹانک میں متحدہ مجلس عمل کے الیکشن دفتر کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا اجلاس میں حلقہ پی کے 94سے متحدہ مجلس عمل کے امیدوار محمو د احمد خان بیٹنی ،این اے 37کے امیدوار مولانا اسد محمود ،متحدہ مجلس عمل کے ضلعی آمیر مولان شریف الدین ،جنرل سیکرٹری شیخ بشیر احمد نقشبندی،فدا محمد بیٹنی ،عطاء الرحمن فاروقی اورشعیب احمد سمیت مقامی قائدین اور ورکروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی انہوں نے کہا کہ جے یو آئی نے جس منشور کی بات کی ہے آج بھی وہ اسی پر قائم ہے عوامی مطالبہ پر ملک کی تمام بڑی دینی جماعتیں متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے متحد ہو چکی ہیں جو وقت کی اہم ضرورت تھی ۔

انہوں نے کہا کہ خان اور نواب کا فلسفہ عوام کو غلام بنا کر رکھنا ہے تاکہ ان کے بنیادی حقوق کو غضب کر کے ان پر حکمرانی کی جا سکے ۔نواب اور خان کے ساتھ ہماری جنگ نظریاتی ہے اور اس کے فرعونیت والے فلسفہ کو ختم کئے بغیر عوام اپنے حقوق حاصل نہیں کر سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کا بلین ٹری منصوبہ کرپشن کے سوا کچھ نہیں تھا صوبائی حکومت کی ناکامی کا اعتراف عمران خان خود کرچکے ہیںاب مرکزی حکومت کیلئے پر تول رہا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ جمعیت کا پارلیمنٹ میں ہوتے ہوئے کوئی مائی کالعل غیر اسلامی بل پاس نہیں کراسکتا ۔ایم ایم اے 2002کی طرح ایک ہی پلیٹ فارم پر متحد ہے قوم کو ایک بار پھر اختیار مل گیا ہے کہ ملک کی بھاگ دوڑ کس کو سونپے گی تمام سیاسی جماعتیں اپنے نظریات کردار اورکار کردگی کی بنیاد پر انتخابی میدان میں ہیں انہوں نے کہا کہ جے یو آئی کے ساتھ عوام کی تاریخی وابستگی ہے اور کبھی اس میں کسی قسم کاکوئی فر ق نہیں آیا73ء کے آئین میںاسلامی دفعات اور قادیانیوں کو غیر مسلم قرار دینے میں جے یو آئی نے کلیدی کردار ادا کیا نادیدہ قوتیں اور مغربی ایجنٹ پاکستان میں اسلامی نظام اور اخلاقی اقدار کو تباہ کرنے پر تلے ہوئے نوجوان انکے ناپاک عزائم کو کامیاب نہ ہونے دیں جمعیت علماء اسلام نے ٹانک کی عوام کو خان ازم سے چھٹکارا دلایا ۔