عمر اکمل (کل)پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کے سامنے پیش ہوں گے

ورلڈ کپ میچز میں مجھے 2 گیندیں چھوڑنے کے عوض 2 لاکھ ڈالرز کی پیشکش ہوئی جسے میں نے ٹھکرا دیا تھا، عمر اکمل کا انٹرویو میں دعویٰ

پیر جون 15:40

لاہور۔25 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) قومی کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز بلے باز عمر اکمل (کل)بدھ کو نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کے سامنے پیش ہوں گے اور اپنے متنازع بیان کے بارے میں وضاحت پیش کریں گے، عمر اکمل نے ایڈیلیڈ اوول میں پاکستان اور بھارت کے درمیان ہونے والے ون ڈے انٹر نیشنل میچ کے بارے میں بیان دے کر اس کے بارے میں شکوک و شبہات پیدا کردئیے ہیں، عمر اکمل نے اپنے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا تھا کہ انہیں 2015ء کے ورلڈ کپ میں میچ فکس کرنے کی پیشکش ہوئی تھی اور اب آئی سی سی نے عمر اکمل کے متنازع بیان پر ان کے خلاف تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔

(جاری ہے)

پاکستان کرکٹ بورڈ نے بھی متنازع انٹرویو پر ٹیسٹ کرکٹر عمر اکمل کو نوٹس جاری کردیا ہے،،پی سی بی نے عمر اکمل کو ہدایت کی ہے کہ وہ 27 جون کو پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کے سامنے پیش ہوں،اس میچ میں بھارت نے پاکستان کو 76 رنز سے شکست دے دی تھی اور عمر اکمل صفر پر آؤٹ ہوئے تھے، آئی سی سی کا کہنا ہے کہ ہم عمر اکمل کے خلاف تحقیقات کا آغاز کررہے ہیں اور فوری طور پر عمر اکمل سے ملاقا ت کرکے ان کا موقف جاننا چاہیں گے، ہمارا اینٹی کرپشن یونٹ کھیل سے کرپشن کے خاتمے کے لیے اقدامات کررہا ہے اور اس بارے میں کسی کے پاس کوئی معلومات ہوں تو وہ آئی سی سی سے رابطہ کرسکتا ہے،،پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ وہ عمر اکمل کے بیان کا جائزہ لے رہا ہے اور تفصیلات جاننے کے بعد ردعمل دیا جائے گا،ایک نجی ٹی وی کو انٹر ویو دیتے ہوئے عمر اکمل نے کہا کہ ورلڈ کپ میں دو گیندیں نہ کھیلنے پر دو لاکھ ڈالرز کی پیشکش ہوئی تھی،انہوں نے کہا کہ جب بھی میں پاکستان کی جانب سے بھارت کے خلاف کھیلتا مجھے پیشکش کی جاتی تھی کہ میچ نہ کھیلوں اس کے عوض مجھے پیسوں کی پیشکش کی جاتی تھی لیکن میرا سٹے بازوں کو ہمیشہ یہی جواب ہوتا ہے کہ میں اپنے ملک کے لیے کھیلنا چاہتا ہوں،عمر اکمل نے ایک انٹرویو میں دعویٰ کیا ہے کہ ورلڈ کپ کے میچوں کے دوران انہیں صرف 2 گیندیں چھوڑنے کے عوض 2 لاکھ ڈالرز کی پیشکش ہوئی جسے انہوں نے مسترد کر دیا، مڈل آرڈر بیٹسمین کا کہنا تھا کہ بھارت کے خلاف میچز سے پہلے انہیں فکسنگ کی آفر ہوتی رہیں، ورلڈ کپ 2015ء میں بھی پیشکش ہوئی تھی کہ 2 گیندیں چھوڑ دو تو ہم تمہیں 2 لاکھ ڈالر دے دیں گے جبکہ اس حوالے سے ہر بار بورڈ کو مطلع کیا، آئی سی سی قوانین کے تحت اگر کسی کھلاڑی کو سٹے باز کی جانب سے پیشکش ہوتی ہے تو اسے اس کی اطلاع ٹیم انتظامیہ کو کرنا ہوتی ہے،خیال رہے کہ گزشتہ برس آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی سے عمر اکمل کو ان فٹ قرار دے کر واپس بھیج دیا گیا تھا جس کے بعد عمر اکمل پاکستانی ٹیم میں واپسی کے لیے غیر معمولی کارکردگی دکھانے میں ناکام رہے ہیں،،پاکستان سپر لیگ میں بھی لاہور قلندرز کی جانب سے وہ مسلسل ناکام رہنے کے بعد ٹیم سے ڈراپ ہوگئے تھے،آئی سی سی حکام کا کہنا ہے کہ وہ عمر اکمل کے بیان کو سنجیدگی سے لے رہے ہیں،آئی سی سی نے ایڈیلیڈ میں چار سال قبل پاک بھارت میچ میں فکسنگ کی تردید کی ہے تاہم عمر اکمل سے بات کرکے مزید تحقیقات کی جائے گی،ترجمان آئی سی سی کے مطابق عمر اکمل کے فکسنگ سے متعلق بیان کی تحقیقات ہوگی اور انٹرنیشنل کرکٹ کونسل جلد از جلد عمر اکمل سے بات کرے گا، انٹرنیشنل کرکٹ کونسل عمر اکمل کے بیان سے واقف ہے، فکسنگ جیسے معاملات پر پلیئر کا رپورٹ کرنا کافی اہم ہے ۔