پاکستان کی آبادی کا بڑا حصہ خواتین پر مشتمل ہے ملکی ترقی کیلئے ان کی تعلیم اور یکساں مواقع فراہم کرنے کی اشد ضرورت ہے‘افتخار علی ملک

پاکستان کی خواتین کسی طرح بھی صلاحیتوں میں دوسرے ممالک کی خواتین سے کم نہیں ہیں، پاکستان کی باصلاحیت خواتین پوری دنیا میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوا رہی ہیں‘سینئر نائب صدر سارک چیمبر

منگل مارچ 16:28

پاکستان کی آبادی کا بڑا حصہ خواتین پر مشتمل ہے ملکی ترقی کیلئے ان کی ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 05 مارچ2019ء) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری(ایف پی سی سی آئی) اور ویمنز چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری بہاولپور کے باہمی اشتراک سے خواتین کے عالمی دن کے حوالے سے ایف پی سی سی آئی ریجنل آفس لاہور میںخصوصی تقریب کا اہتمام کیا گیا۔تقریب میں اخوت فاؤنڈیشن کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر امجد ثاقب اور سارک چیمبر کے سینئر نائب صدر افتخار علی ملک نے خصوصی طور پر شرکت کی۔

اس موقع پرتقریب کے مہمان خصوصی ا خوت فاؤنڈیشن کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر امجد ثاقب نے کہاکہ اخوت یونیورسٹی قائم ہو چکی ہے جس میں 600سے زائد طلباء بغیر فیس کے تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔اخوت قرضہ حسنہ کا پروگرام دنیا بھر میں قرضہ حسنہ کا سب سے بڑا پروگرام ہے۔

(جاری ہے)

اخوت ڈیڑھ کروڑ لوگوں کو 77ارب سے زائد کا قرض دے چکا ہے جس کی واپسی کا تناسب 99.99فیصد ہے۔

ایف پی سی سی آئی کی نائب صدر شیریں ارشد خان نے کہاکہ اخوت ایف پی سی سی آئی کے ساتھ مل کر پاکستان کے تمام وویمنز چیمبر کی ممبران کو قرضہ دینے کے نئے پروگرام کا آغاز کرئے۔خواتین کی معیشت میں عملی شرکت کے بغیر ترقی کا مقصد حاصل نہیں ہو سکتا،خواتین کا کاروبار،تعلیم اور دیگر شعبوں میں کردار قابل ستائش ہے،۔ایف پی سی سی آئی میں خواتین کو بھر پور نمائندگی دی گی ہے۔

انہوں نے مزید کہاکہ و قت کی اہم ضرورت ہے کہ خواتین کے لیے کاروبار کا سازگار ماحول پیدا کیا جائے تاکہ نہ صرف وہ ملکی معاشی ترقی میں کردار ادا کر سکیں بلکہ خود مختا ر بھی بن سکیں ۔ فیڈریشن کی لیڈر شپ خواتین کی راہنمائی کے لئے ہمیشہ کوشاں ہے۔خواتین ملکی ترقی میں اپنا کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہیں مگر خواتین کو ایک منظم پلیٹ فارم اور راہنمائی کی ضرورت ہے۔

حکومت بھی کاروباری خواتین کو کم شرح سود پر قرضے فراہم کرئے۔سارک چیمبر کے سینئر نائب صدر افتخار علی ملک نے کہا کہ پاکستان کی آبادی کا بڑا حصہ خواتین پر مشتمل ہے اور ملکی ترقی کیلئے ان کی تعلیم اور یکساں مواقع فراہم کرنے کی اشد ضرورت ہے۔پاکستان کی خواتین کسی طرح بھی صلاحیتوں میں دوسرے ممالک کی خواتین سے کم نہیں ہیں، پاکستان کی باصلاحیت خواتین پوری دنیا میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوا رہی ہیں۔

آج پاکستانی خواتین زندگی کے ہرشعبے میں اپنی اعلی صلاحیتوں کے بل بوتے پر بہترین خدمات سر انجام دے رہی ہیں۔تقریب میں سماجی و سیاسی رہنما فوزیہ قصوری،رکن صوبائی اسمبلی عظمیٰ کاردار،رکن صوبائی اسمبلی سعدیہ سہیل،نگہت محمود،سدرہ ضمیر ،صبا شفیق،آصفہ ریئس،رابعہ عثمان،حمیرہ تسنیم،عظمیٰ خورشید اور ڈاکٹر شاہد قریشی سمیت دیگر نے بھی شرکت کی ۔