فیصل ۱ٓباد، کمالیہ،ساہیوال ، چشتیاں میں بھنڈی کی کاشت میں زبردست اضافہ

جمعہ فروری 13:57

فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 14 فروری2020ء) جامعہ زرعیہ فیصل ۱ٓباد کے ماہر ین شعبہ اگرانومی نے بھنڈی توری کے کاشتکاروں کو سفارش کی ہے کہ وہ فروری میں درجہ حرارت20 سے 30 سینٹی گریڈ ہونے پر بھنڈی توری کی کاشت شروع کردیںکیونکہ بھنڈی توری کیلئے گرم مرطوب آب وہوا کی ضرورت ہے جبکہ بھنڈی پنجاب کے اکثر علاقوں میں کاشت کی جاتی ہے لیکن اس کی زیادہ کاشت کمالیہ، ساہیوال، چشتیاں اور فیصل آباد میں ہوتی ہے۔

(جاری ہے)

ایک ملاقات کے دوران انہوں نے بتایا کہ بھنڈی توری کے لئے ذرخیز میرا اور پانی کے بہتر نکاس والی زمین کا انتخاب کیاجائے اورکاشتکار بھنڈی توری کی بوائی کے لئے 10 سے 12 کلوگرام بیج فی ایکڑ استعمال کریں۔انہوںنے کہاکہ بوقت بوائی نائٹروجن 25کلوگرام ، فاسفورس 35کلوگرام اور پوٹاش 25 کلو گرام کھاد فی ایکڑ استعمال کی جائے ۔علاوہ ازیں کاشتکار فصل سے جڑی بوٹیوں کے تدارک کیلئے 3 سے 4 مرتبہ مناسب وقت پر گوڈی کریں اور اس عمل کے دوران پودوں پر مٹی چڑھائیں تاکہ فصل کو نقصان سے بچایاجاسکے۔