Live Updates

چین کورونا وائرس پر قابو پانے والا پہلا ملک بن گیا، مسلسل دوسرے روز بھی کوئی نیا کیس رپورٹ نہ ہوا

چین میں کورونا وائرس کے نئے رپورٹ ہونے والے کیسز میں ایک بھی مقامی کیس نہیں، تمام کیسز بیرون ممالک سے آنے والے شہریوں میں رپورٹ ہوئے

Kamran Haider Ashar کامران حیدر اشعر جمعرات مارچ 09:30

چین کورونا وائرس پر قابو پانے والا پہلا ملک بن گیا، مسلسل دوسرے روز ..
بیجنگ (اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 26 مارچ 2020ء) چین کورونا وائرس پر قابو پانے والا پہلا ملک بن گیا، مسلسل دوسرے روز بھی کوئی نیا کیس رپورٹ نہ ہوا۔ چین میں کورونا وائرس کے نئے رپورٹ ہونے والے کیسز میں ایک بھی مقامی کیس نہیں، تمام کیسز بیرون ملک سفر کرنے والوں میں کے رپورٹ ہوئے۔ تفصیلات کے مطابق چائنہ میں مسلسل دوسرے روز کسی بھی مقامی چینی بانشندے میں کورونا وائرس کی تشخیص نہیں ہوئی ہے۔

خبر ایجنسی کے مطابق چین کے قومی ادارہ برائے صحت نے بتایا ہے کہ بدھ کے روز کے اختتام تک چین بھر میں کورونا وائرس کے 67 نئے کیس رپورٹ ہوئے جس کے مبعد ملک میں وائرس سے متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 81 ہزار 285 ہو گئی ہے۔ 
ادارے نے چین میں مجموعی طور پر 3 ہزار 287 افراد کی ہلاکتوں کی تصدیق بھی تصدیق کی۔

(جاری ہے)

خبر رساں ادارے کے مطابق کورونا وائرس کے نئے سامنے آنے والے کیسز میں ایک مقامی چینی باشندہ شامل نہیں بلکہ تمام مریض بیرون ممالک سے سفر کر کے واپس چین آئے ہیں جن میں بدھ کے روز کورونا وائرس کی تصدیق کی گئی ہے۔

خبر ایجنسی نے بتایا کہ 60 ملین لوگوں پر مشتمل چینی صوبے ہوبے میں بدھ کے روز کوئی بھی نیا کیس سامنے نہیں آیا جس کے بعد عوامی نقل و حرکت کے لیے بارڈز کھول دیے گئے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ ہوبے میں عوامی ذرائع آمد و رفت بھی کھول دیے گئے ہیں جبکہ لوگوں کو ماسک پہنے گلیوں میں گشت کرتے ہوئے بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ صوبہ ہوبے جہاں 2019ء کے آخر میں کورونا وائرس کی وباء پھوٹی تھی وہاں سے 8 اپریل تک لاک ڈاؤن ہتا دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس کے کیسز کے حوالے سے عالمی ادارہ صحت سمیت متعدد عالمی اداروں کی جانب سے بنائے گئے آن لائن میپ کے مطابق اسپین میں ہلاکتوں کی تعداد 3647 تک جا پہنچی ہے اور اٹلی میں ہلاکتوں کی تعداد 7503 ہو گئی ہے۔ اگر تقابلی جائزہ لیا جائے تو اس وقت چین میں مذکورہ دونوں ممالک سے کم 3287 ہلاکتوں کی تصدیق کی جا چکی ہے۔

عالمی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق جہاں دنیا بھر میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں دگنی اسپیڈ سے اضافہ ہو رہا ہے وہیں دنیا بھر میں صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد میں سستی دیکھی جا رہی ہے اور 25 مارچ کی شام تک دنیا بھر میں صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد محض ایک لاکھ 12 ہزار کے قریب تھی۔ صحت یاب ہونے والے نصف سے زیادہ یعنی 70 ہزار سے زائد مریضوں کا تعلق چین سے تھا جبکہ باقی 40 ہزار مریض دنیا کے دیگر ممالک سے صحت یاب ہوئے۔

صحت یاب مریضوں کے حوالے سے چین کے بعد ایران دوسرے نمبر پر تھا جہاں 25 مارچ کی شام تک صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 9 ہزار 625 تک جا پہنچی تھی اور وہاں پر کورونا کے مجموعی مریضوں کی تعداد 27 ہزار سے زائد ہو چکی تھی اور 2 ہزار سے زائد ہلاکتیں بھی ہوچکی تھیں۔
کرونا وائرس کی تباہ کاریاں سے متعلق تازہ ترین معلومات