وائس ریکارڈر تلاش کرنے کا کریڈٹ لینے کے لیے 2 دعویدار سامنے آگئے

ایئربس کمپنی کی ٹیم کا کہنا ہے کہ کاک پٹ وائس ریکارڈر ان کے ماہرین کی ٹیم نے دریافت کیا ہے،محکمہ ہوابازی کے مطابق کاک پٹ وائس ریکارڈر کے لیے انہوں نے خصوصی ٹیم تشکیل دی تھی

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ مئی 12:16

وائس ریکارڈر تلاش کرنے کا کریڈٹ لینے کے لیے 2 دعویدار سامنے آگئے
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2020ء) وائس ریکارڈر تلاش کرنے کا کریڈٹ لینے کے لیے 2 دعویدار سامنے آگئے۔تفصیلات کے مطابق پی آئی اے کے ایئر بس طیارے کا کاک پٹ وائس ریکارڈر ملبے کے نیچے سے برآمد ہوا تھا۔طابق کراچی میں 22 مئی کو حادثے میں تباہ ہونے والے طیارے کا کاک پٹ وائس ریکارڈر 6 روز بعد ملا،جمعرات کو ترجمان پی آئی اے کے مطابق تحقیقاتی ٹیم نے ملبہ کو اٹھوانے کی ہدایات جاری کیں تھیں ۔

جمعرات کی صبح نئے سرے سے تلاش کا کام شروع کیا گیا جس کے بعد ملبے کے نیچے دبا ہوا وائس ریکارڈر مل گیا ۔ کاک پٹ وائس ریکارڈر ملنے کے بعدتحقیقاتی عمل میں بہت مدد ملے گی ۔ ترجمان نے بتایا کہ پی آئی اے کی ٹیمیں بہت سرگرمی سے اس اہم پرزے کی تلاش میں سرگرم تھیں اور تلاش کے بعد کاک پٹ وائس ریکارڈر ائیرکرافٹ ایکسیڈینٹ تحقیقاتی بورڈ کے حوالے کردیا گیا ہے ۔

(جاری ہے)

تاہم اب حادثے کا شکار طیارے کا کاک پٹ وائس ریکارڈر ملنے کے بعد کریڈٹ لینے کے لئے دو دعویدار سامنے آگئے ہیں۔ایک جانب ایئربس کمپنی کی ٹیم کا کہنا ہے کہ کاک پٹ وائس ریکارڈر ان کے ماہرین کی ٹیم نے دریافت کیا ہے لیکن دوسری جانب محکمہ ہوابازی کا کہنا ہے کہ کاک پٹ وائس ریکارڈر کے لیے انہوں نے خصوصی ٹیم تشکیل دی تھی۔طیارے کے ملبے کو جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ہی منتقل کیا جارہا ہے کراچی میں حادثے کا شکار ہونے والے طیارے کو بنانے والی کمپنی نے کہا ہے کہ طیارے کا کاک پٹ وائس ریکارڈر اور فلائٹ ڈیٹا ریکارڈر فرانس میں ڈی کوڈ ہوگا۔

ایئر بس کمپنی کے مطابق پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز (پی آئی ای) کے حادثے کے شکار طیارے کا کاک پٹ وائس ریکارڈر ملنے کے بعد پاکستانی حکام نے ریکارڈر ڈی کوڈ کرنے کی درخواست کی ہے۔ ایئربس انتظامیہ کے مطابق کاک پٹ وائس ریکارڈر اور فلائٹ ڈیٹا ریکارڈر فرانس منتقل کرنے پر پاکستانی ٹیم سے بات ہوگئی ہے۔انہوں نے کہاکہ کاک پٹ وائس ریکارڈر اور فلائٹ ڈیٹا ریکارڈر کو فرانس میں ڈی کوڈ کیا جائے گا۔