مہنگائی میں اضافے کا تسلسل جاری ہے،ستمبر کے تیسرا ہفتہ میں بھی مہنگائی کنٹرول نہ ہو سکی

ٹماٹر، برائلر مرغی ،گندم، چینی سمیت دودھ بھی مہنگا ہوگیا،پیاز، لہسن، چائے کی پتی، گرم مصالحہ جات کی قیمتوں کو بھی پر لگ گئے

ہفتہ ستمبر 15:52

مہنگائی میں اضافے کا تسلسل جاری ہے،ستمبر کے تیسرا ہفتہ میں بھی مہنگائی ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 19 ستمبر2020ء) مہنگائی میں اضافے کا تسلسل جاری ہے،ستمبر کے تیسرا ہفتہ میں بھی مہنگائی کنٹرول نہ ہو سکی،ٹماٹر، برائلر مرغی ،گندم، چینی سمیت دودھ بھی مہنگا ہوگیا،پیاز، لہسن، چائے کی پتی، گرم مصالحہ جات کی قیمتوں کو بھی پر لگ گئے،ہفتہ وار بنیادوں پرمہنگائی کی شرح میں0.71فیصد اضافہ ریکارڈ کیاگیا، اس عرصے میں 26اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ،3 اشیاء کی قیمتوں میں کمی اور22 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں لاک ڈائون کے خاتمہ کے بعد ستمبر کا تیسرا ہفتہ بھی مہنگائی کے چنگل سے نہ نکل سکا۔ کووڈ 19 سے نبرد آزما حکومت سے مہنگائی کنٹرول نہ ہو سکی۔ ادارہ شماریات کی جانب سے مہنگائی کے ہفتہ وار اعدادو شمار کے مطابق ایک ہفتے کے دوران مہنگائی کی شرح میں0.71 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے،جس کے بعد ملک میں مہنگائی کی مجموعی شرح 8.72 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔

(جاری ہے)

ٹماٹر، برائلر مرغی، آٹا، چینی، پیاز، لہسن، چائے کی پتی، گرم مصالحہ جات سمیت تازہ دودھ سب مہنگائی کی زد میںہے۔ گزشتہ ہفتے کے دوران 26اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔گزشتہ ہفتے انڈوں کی فی درجن قیمت میں 7 روپے کا اضافہ ہوا جبکہ 28 فیصد اضافہ کے ساتھ ٹماٹر 20روپے فی کلو مہنگا ہوا۔ ٹماٹر کی فی کلو قیمت 71روپے سے بڑھ کر 91روپے کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔

برائلر مرغی فی کلو 8.50روپے جبکہ ایک ہفتے کے دوران دال ماش اور دال مونگ 2 روپے فی کلو تک مہنگی ہو گئی ہیں۔ اس دوران چینی کی فی کلو قیمت میں حالیہ اضافہ کے بعد94 روپے 72 پیسے کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔ادارہ شماریات کے اعداد و شمار کے مطابق 17 ہزار روپے تک آمدنی رکھنے والے شہریوں کیلئے مہنگائی کی شرح 11.67فیصد شمار کی گئی ہے جبکہ 17 سے 23ہزار روپے تک کمانے والوں کیلئے مہنگائی کی شرح 11.37 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔

گزشتہ ہفتے کے دوران تازہ دودھ، دہی، خشک دودھ، جلانے کی لکڑی سمیت لہسن، گڑ، کوکنگ آئل کی قیمتوں میں بھی اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ دوسری طرف کیلے 3 روپے 44 پیسے فی درجن، ایل پی جی کے گھریلو سلنڈر 13 روپے اور آلو فی کلو 16 پیسے سستے ہوئی جبکہ اس دوران چاول، نمک، بریڈ سمیت 26اشیا کی قیمتوں میں استحکام رہا۔