نارتھ کراچی کی صنعتوں کو پانی کی عدم فراہمی، پیداواری سرگرمیاں رکاوٹ کا شکار

طلب کے مطابق پانی نہ دیا گیاتو صنعتوں کوخطیر نقصانات کا سامنا کرنا پڑے گا، عمران معیز خان

بدھ ستمبر 16:56

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 ستمبر2020ء) نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری ( نکاٹی ) کے قائمقام صدر عمران معیز خان نے صنعتوںکو پانی کی عدم دستیابی پرتحفظات کا اظہار کرتے ہوئے ایم ڈی واٹر بورڈ سے مطالبہ کیا ہے کہ پیداواری سرگرمیاں بلارکاوٹ جاری رکھنے کے لیے صنعتوں کو طلب کے مطابق پانی کی فراہمی یقینی بنائی جائے بصورت دیگر برآمدی آرڈرز کی بروقت تکمیل خطرے میں پڑ جائے گی جس سے ملکی برآمدات متاثر ہوں گی۔

عمران معیز خان نے ایک بیان میں کہاکہ صنعتی پیداواری سرگرمیاں جاری رکھنے کے لیے پانی بنیادی خام مال کی اہمیت رکھتا ہے خاص طور پر ٹیکسٹائل، ٹاولز، ڈائنگ، بلیچنگ، اسٹیچنگ ودیگر صنعتی یونٹس کو طلب کے مطابق پانی فراہم نہ ہونے سے پیداواری عمل رکاوٹ کا شکار ہورہا ہے لہٰذا اگر ان صنعتوں کو فوری طور پر وافر مقدار میں پانی کی فراہمی بحال نہ کی گئی تو صنعتکاروں کو خطیر پیداواری نقصانات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

(جاری ہے)

نکاٹی کے قائمقام صدر نے سوال اٹھایا کہ حالیہ موسلادھار بارشوں کے بعد ڈیمز پانی سے بھر گئے ہیں اورحب ڈیم سمیت دیگر ڈیمز میں پانی اپنی بلند سطح پر ریکارڈ کیا گیا ہے اس کے باوجود کراچی کی صنعتوں کو پانی نہ دینا انتہائی تشویشناک ہے۔انہوں نے کہاکہ بارشوں سے پہلے جب پانی کی قلت تھی تو صنعتکاروں نے حکومت کا ساتھ دیتے ہوئے اپنی مدد آپ کے تحت پانی کا بندوبست کیا اور نجی ٹینکرز کے ذریعے پانی حاصل کرکے پیداواری عمل جاری رکھا حالانکہ ٹینکرز سے پانی لینے سے پیداواری لاگت میں اضافہ ہوا مگر صنعتکار برادری نے ملک کے بہتر ترین معاشی مفاد میں مالی نقصانات برداشت کیے۔

عمران معیز خان نے مزید کہاکہ جب تک صنعتوں کو بنیادی سہولتیں فراہم نہیں کی جاتیںتب تک کورونا کی تباہ کاریوں سے نمٹنا ممکن نہیں۔حکومت کو چاہیئے کہ وہ صنعتوں کواولین ترجیح پر پانی، بجلی و گیس کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایات جاری کرے تاکہ صنعتی پہیہ بلارکاوٹ گھوم سکے اور صنعتوں کو فروغ حاصل ہو جس سے روزگار کے وسیع مواقع پیدا ہونے کے ساتھ ساتھ ملکی برآمدات میں بھی اضافہ ہوگا۔