ہمارے نیوکلیئر ہتھیار چین کے ساحل سے ڈائریکٹ امریکی سرزمین پر حملہ کریں گے

بیجنگ کے نئے اسٹیلتھ بمبارایچ 20 امریکہ کو للکارنے کے لیے میدان میں آ چکا

Sajjad Qadir سجاد قادر جمعہ نومبر 07:09

ہمارے نیوکلیئر ہتھیار چین کے ساحل سے ڈائریکٹ امریکی سرزمین پر حملہ ..
بیجنگ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 نومبر2020ء) پینٹا گون نے اس حقیقت کو تسلیم کر لیا ہے کہ چین ایسے میزائل اور نیوکلیئر ہتھیار تیار کر چکا ہے کہ اگر وہ اپنے ساحل سے بیٹھ کر ہی لانچ کر دے تو امریکہ کے کئی بڑے شہروں کو تباہ کر سکتا ہے۔ ہائی آفیشلز نے امریکی حکومت کو اس بات سے بھی آگاہ کیا ہے کہ چین ایک ایسے خفیہ جنگی بیڑے کو تیار کرنے کے آخری مراحل میں ہے جو امریکہ کی اینٹ سے اینٹ بجا دے گا۔

ذرائع کے مطابق چین کا حال ہی میں تیار ہونے والا بمبار ایچ20اس صلاحیت کا مالک ہے کہ چینی ساحل سے میلوں دور امریکی ملٹری کے اڈے کو پل بھر میں نیست و نابود کر کے رکھ دے۔یو کے تھنک ٹینکس کی رپورٹ کے مطابق چین کا یہ لانگ رینج سب سونک وار پلین ایک ایسا خفیہ اور پراسرار ملٹری پراجیکٹ ہے جو امریکہ کی نیوکلیئر بیس کو بڑی آسانی سے تباہ کرنے کی صلاحیت کا مالک ہے۔

(جاری ہے)

پینٹاگون میں بیٹھے ہائی آفیشل نے بھی اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ چین کا یہ بمبار پراجیکٹ پانچ ہزار میل کا سفر پلک جھپکنے میں کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور یہ امریکہ کے کئی علاقے جیسا کہ گوم کو تباہ کر دے گا۔دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ ایچ20بمبار چین کی فوجی طاقت کو ناقابل تسخیر بنانے میں مدد دے گا۔لہٰذا ایچ 20چین کو انٹر کانٹی نینٹل پاور پروجیکشن صلاحیت میں خود دار کر دے گا۔

چونکہ اس بمبار کی رینج پانچ ہزار میل تک ہے جبکہ امریکہ کا اسٹریٹجک خطہ جو کہ گوم ہے وہ چین سے محض دو ہزار میل کی دوری پر واقع ہے اور یوں چین نے امریکہ کو تباہ کرنے میں جنگ کی صورت میں سبقت حاصل کر لی ہے۔دونوں ممالک سپر پاور ہیں اور معاشی اعتبار سے بھی اس وقت دنیا کو لیڈ کرنے جا رہے ہیںاور گزشتہ برس یہ بڑی معاشی جنگ بھی لڑ چکے ہیں جس میں ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کی کمپنی ہواوے سمیت دیگر کئی انٹرنیشنل کمپنیوں کو بین کرتے ہوئے معاشی دھچکا دینے کی کوشش کی تھی۔تاہم اب نیوکلیئر ہتھیاروں کی دوڑ میں چین نے سبقت لے جا کر امریکہ کی تیسری آنکھ کھول دی ہے کہ اب کچھ بھی ناممکن نہیں۔