سعودی عرب کے علاقے پر ایک اور ڈرون حملہ ناکام

خمیس مشیط کی جانب بھیجا گیا بارود بردار ڈرون ہدف پر پہنچنے سے پہلے ہی تباہ کر دیا گیا

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات 5 اگست 2021 10:05

سعودی عرب کے علاقے پر ایک اور ڈرون حملہ ناکام
 ریاض(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔5 اگست 2021ء) سعودی عرب گزشتہ کئی سالوں سے حوثی ملیشیا کے تخریبی حملوں مسلسل زد میں ہے۔ ان ڈرون اور میزائل حملوں اور دیگر جھڑپوں میں متعدد سعودی فوجی اور عام شہری بھی اپنی جان گنوا بیٹھے ہیں۔رواں سال کے دوران ان تخریبی حملوں میں تیزی آ گئی ہے۔ یمن میں قیام امن کے لیے قائم فوجی اتحاد کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ گزشتہ رات ایک بار پھر سعودی عرب کو دہشت گرد حملے کا نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی ہے۔

جسے ناکام بنا دیا گیا ہے۔ ترجمان کے مطابق سعودی سرحدی علاقے خمیس مشیط کی جانب ایک بارود بردار ڈرون بھیجا گیا تھا جسے راستے میں ہی روک کر تباہ کر دیا گیا، جس کی وجہ سے سعودی عرب بڑی تباہی سے بچ گیا ہے۔ واضح رہے کہ چار روز قبل بھی یمن کی حوثی ملیشیا نے بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے کے لیے جازان کے علاقے میں ایک ہی روز میں 4 بیلسٹک میزائلوں سے حملہ کیا اور 2 بارود بردار ڈرونز بھی بھیجے گئے تھے تاہم مستعد سعودی فضائیہ نے ان تباہی پھیلانے والے میزائلوں اور ڈرونز کو راستے میں ہی تباہ کر دیا۔

(جاری ہے)

عر ب اتحادی افواج کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سعودیہ پر اب تک حوثی ملیشیا کی جانب سے 383 میزائل اور 960 ڈرون حملے کیے جا چکے ہیں۔اس کے علاوہ حوثیوں نے 79 بارودی کشتیوں کے ذریعے بھی نشانہ بنانے کی کوشش کی۔ سمندر میں205 مقام پر بارودی سرنگیں بچھائیں اور سرحدی علاقوں پر96،912 گولے داغے ہیں۔چند روز پہلے بھیعرب فوجی اتحاد نے بہترین کارکردگی اور مستعدی دکھاتے ہوئے سعودی عرب کے ایک تجارتی جہاز ممکنہ تباہی سے بچا لیا ہے۔

عرب فوجی اتحاد کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ یمن کی حوثی ملیشیا نے بحیرہ احمر کے جنوب میں ایک تجارتی جہاز کو ڈرون حملے سے نشانہ بنانے کی کوشش کی تاہم مستعداتحادی افواج نے اس بارود بردار طیارے کو ہدف پر پہنچنے سے پہلے ہی مارا گرایا ہے۔ عرب اتحاد کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا کی جانب سے بحیرہ احمر میں عالمی تجارات اور جہاز رانی کی سرگرمیوں کو مسلسل نقصان پہنچانے کی کوشش کی جا رہی ہے تاہم ابھی تک انہیں ناکامی کا مزہ چکھنا پڑا ہے۔