ٹرمپ بوکھلاہٹ کا شکار،شمالی کورین جنرل سے مصافحہ کی بجائے سیلیوٹ کر ڈالا

امریکی صدر نے ایسی حکومت کے جنرل کو سلیوٹ کیا جو "کریک ڈائون" پالیسی کے سبب معروف ہے،غیر ملکی میڈیا

پیر جون 15:50

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ پیر جون ء)امریکی صدر ٹرمپ بوکھلاہٹ کا شکار ہو گئے، شمالی کورین جنرل سے مصافحہ کی بجائے سیلیوٹ کر ڈالا، امریکی صدر نے ایک ایسی حکومت کے جنرل کو سلیوٹ کیا جو "کریک ڈان" کی پالیسی کے سبب معروف ہے۔ شمالی کوریا کے سرکاری ٹیلی وژن نے دو روز قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور شمالی کوریا کے ایک جنرل کے درمیان سلام اور مصافحے کے مناظر نشر کیے تھے جس کے بعد امریکا میں "میڈیا" تنازع کھڑا ہو گیاہے۔

اس مختصر وڈیو کلپ میں ٹرمپ نے پہلے شمالی کوریا کے مسلح افواج کے وزیر نو کوان چول کی طرف مصافحے کے لیے ہاتھ بڑھایا تاہم شمالی کوریا کے جنرل نے ہاتھ ملانے کے بجائے انہیں فوجی سلیوٹ کیا۔ اس پر ٹرمپ کے پاس بھی جوابی سلیوٹ کے سوا کوئی چارہ نہ تھا۔

(جاری ہے)

اس کے فوری بعد جنرل چول نے مصافحے کے لیے ٹرمپ کی جانب ہاتھ بڑھا دیا جس پر امریکی صدر یک دم بوکھلا گئے اور اس بوکھلاہٹ اور شرمندگی کو کیمروں کی آنکھ نے بھی محفوظ کر لیا۔

اس حوالے سے ٹرمپ کے چاہنے والوں کا کہنا ہے کہ یہ عام سی بات تھی اور اس میں کوئی شرمندگی کی بات نہیں۔ دوسرے جانب بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ "بوکھلاہٹ" پر مبنی عجیب سا منظر تھا۔ علاوہ ازیں اس بات کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے کہ امریکی صدر نے ایک ایسی حکومت کے جنرل کو سلیوٹ کیا جو "کریک ڈان" کی پالیسی کے سبب معروف ہے۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments