ٍحکومت کی نااہلی کی وجہ سے گیس کے شعبے کا گردشی قرضہ 350 ارب روپے ہو گیا ہے،شیری رحمان

گردشی قرضوں، گیس بحران اور ایل ان جی درآمد میں تاخیر پر پارلیمانی تحقیقات کی جائیں ،میڈیا سے گفتگو

جمعرات دسمبر 22:14

ٍحکومت کی نااہلی کی وجہ سے گیس کے شعبے کا گردشی قرضہ 350 ارب روپے ہو گیا ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 03 دسمبر2020ء) پی پی رہنما شیری رحمانن نے کہا ہے کہ حکومت کی نااہلی کی وجہ سے گیس کے شعبے کا گردشی قرضہ 350 ارب روپے ہو گیا ہے ۔ حکومت گردشی قرضوں، گیس بحران اور ایل ان جی درآمد میں تاخیر پر پارلیمانی تحقیقات کرے ۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے انہوں نے کہا حکومت ملک کو گردشی قرضوں میں ڈبو رہی ہے،۔

انہوں نے کہا توانائی کا گردشی قرضہ 2253 ارب روپے تک پہنچ چکا ہے۔ انہوں نے کہا اب حکومت کی نااہلی کی وجہ سے گیس کے شعبے کا گردشی قرضہ 350 ارب روپے ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا ملک میں پہلے ہی گیس کا شدید بحران ہے۔ انہوں نے کہا گیس کا گردشی قرضہ پورا کرنے کے لئے اب گیس کی قیمتیں بڑھائی جائے گی۔ شیری رحمانن نے کہا اس حکومت کے پاس ہر معاملے کا حل قیمتیں بڑہانا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا ایل این جی درآمد میں تاخیر کی وجہ سے ملک کو بحران اور اربوں روپے کا نقصان ہوا۔ شیری رحمانن نے کہا نااہل حکمرانوں کی وجہ سے ملک میں ایک کے بعد دوسرابحران کھڑا ہو رہا ہے ۔شیری رحمان نے کہا ایل این جی درآمد میں تاخیر اور پھر مہنگے داموں پر خریداری پر سوالات اٹھتے ہیں۔ شیری رحمانن نے کہا کہ نااہل حکمران کی غلطیوں اور عدم اقدامات کی وجہ سے ملک کو اربوں روپے کا نقصان ہو رہا ہے، شیری رحمانن نے کہا صرف ایل این جی درآمد میں تاخیر کی وجہ سے 122 ارب روپے کا نقصان ہوا۔

شیری رحمانن نے کہا کابینہ کے عدم اقدامات اور ناکامیوں کے ذمہ دار وزیر اعظم ہیں۔ شیری رحمان نے کہا حکومت سے گردشی قرضوں، گیس بحران اور ایل ان جی درآمد میں تاخیر پر پارلیمانی تحقیق کرانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ن

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments