خواتین پر تشدد کے خاتمہ کے حوالے سے موثر اقدامات کئے جا رہے ہیں‘حسان خاور

معاشرے سے عدم برداشت کا رجحان ختم کرنے کے لیے اقدامات ناگزیر ہو چکے‘معاون خصوصی وزیر اعلی

بدھ 8 دسمبر 2021 23:52

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 08 دسمبر2021ء) معاون خصوصی وزیر اعلی پنجاب برائے اطلاعات حسان خاور نے کہا کہ پنجاب حکومت نے خواتین پر تشدد اور ہراسمنٹ کے خلاف قانون سازی کی جبکہ ان سے امتیازی سلوک کا خاتمہ کرتے ہوئے تحفظ فراہم کرنے کے حوالے سے عملی اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ لاہور ہائیکورٹ میں عورتوں پر تشدد کے خاتمہ کے عنوان پر منعقدہ آگاہی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے معاون خصوصی وزیر اعلی پنجاب برائے اطلاعات حسان خاور نے کہا کہ معاشرے میں عدم برداشت کی وجہ سے سوسائٹی کو بہت نقصان پہنچ رہا ہے۔

عدم برداشت کا رجحان ختم کرنے کیلئے اقدامات ناگزیر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے رویوں کی وجہ سے ہی آگے نہیں بڑھ پا رہے۔ حسان خاور نے کہا کہ خواتین پر تشدد صرف خواتین کا ہی نہیں مردوں کا بھی مسئلہ ہے۔

(جاری ہے)

کیونکہ جب خواتین پر تشدد کی بات آتی ہے تو مرد حضرات اسے صرف عورت کا مسئلہ سمجھ کر آنکھیں بند کر لیتے ہیں۔ اس مسئلہ کو ہم سب نے ملکر ٹھیک کرنا ہے اور بحیثیت مرد خود احتسابی کے مرحلے سے گزرنا اور اپنی سوچ تبدیل کرنا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ خواتین پر دیدہ دلیری سے تشدد کیا جاتا ہے کیونکہ ہمارے ہاں انصاف فراہم کرنے کے فیصلوں میں تیزی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ عورتوں کے خلاف تشدد ختم کرنا ہے تو ہمیں اپنی ورک پلیس کو ان کیلئے محفوظ بنانا ہوگا اور تھانوں، عدالتوں، تفتیشی اداروں اور دیگر محکموں میں انہیں بالخصوص سہولیات فراہم کرنے کیلئے ہنگامی اور موثر اقدامات کرنا ہوں گے۔ اس موقع پر جرم کا شکار ہونے والی ایک خاتون نے حسان خاور کو اپنا مسئلہ سنایا جس پر انہوں نے خاتون کی شنوائی کی یقین دہانی کرواتے ہوئے احکامات بھی جاری کئی

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments

>