موسمی تغیر و تبدل اور ممکنہ بارشوں سے فصلوں کی پیداوار اور کاشت متاثر ہو نے کا امکان ہے،

کاشتکار موسمی حالات کو مد نظر رکھتے ہوئے کاشتہ اور زیر کاشت فصلوں پر خصوصی توجہ دیں،محکمہ زراعت

منگل اپریل 16:20

لاہور۔17 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء) ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے کہا ہے کہ موسمی تغیر و تبدل سے درجہ حرارت میں اُتار چڑھائو اور ممکنہ بارشوں کی وجہ سے موسم بہار اور خریف کی فصلوں کی بالترتیب پیداوار اور کاشت متاثر ہوسکتی ہے ،کاشتکار موسمی حالات کو مد نظر رکھتے ہوئے کاشتہ اور زیر کاشت فصلوں پر خصوصی توجہ دیں،ترجمان نے بتایا کہ دھان کے کاشتکار گندم کی برداشت کے بعد فارغ کھیتوں میں بارش کے وتر کو استعمال کرتے ہوئے دھان کی کاشت کے لیے زمین خشک طریقے سے تیار کریں اور لیزر لیولر کے ذریعے غیر ہموار کھیتوں کو ہموار کریں،کھیتوں کے بند مضبوط کریں، جڑی بوٹیوں کی موثر تلفی پر خصوصی توجہ دیں اور دھان کی موٹی اور ہائبرڈ اقسام کی پنیری کی کاشت آ ئندہ ماہ 20مئی سے شروع کریں، انہوںنے کہا ہے کہ مارچ میں تاخیرسے کاشتہ مکئی کو جو اب بُور آنے اور عمل زیرگی کے مراحل میں ہی4سے 5 دن بعد یا ہفتہ میں دوبار پانی ضرور لگائیںتاکہ عمل زیرگی متاثر نہ ہواور پیداوار میں کمی نہ آئے۔

(جاری ہے)

ترجمان کے مطابق کپاس کی کاشت جاری ہے اور ممکنہ بارشوںکے باعث موسم میں نمی بڑھنے سے کپاس کی کاشتہ فصل پر رس چوسنے والے کیڑوں خصوصاًً چست تیلے کا حملہ بڑھنے کا خطرہ ہوتا ہے لہٰذاکپاس کے کاشتکار کاشتہ فصل پر خصوصی توجہ دیں اور رس چوسنے والے کیڑوں کے لیے ہفتہ میں دو بار پیسٹ سکائوٹنگ کریںاور اگر کیڑوں کی تعداد نقصان کی معاشی حد سے زیادہ ہو تو محکمہ زراعت کے مقامی زرعی ماہرین کے مشورہ سے سفارش کردہ زہر کا سپرے کریں۔