وزیراعظم کی زیر صدارت کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی اجلاس

پی ایس او کو بجلی کے شعبہ کے استعمال کیلئے فرنس آئل کی درآمد کی اجازت دیدی

منگل اپریل 23:27

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء) کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے پاکستان سٹیٹ آئل کو بجلی کے شعبہ کے استعمال کیلئے فرنس آئل کی درآمد کی اجازت دیدی ہے تاکہ آئندہ مہینوں میں ایندھن کے مناسب ذخیرے کو برقرار رکھا جا سکے۔ ای سی سی کا اجلاس منگل کو وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت وزیراعظم آفس میں منعقد ہوا۔

ای سی سی نے ماچھیکے۔تارو جبہ آئل پائپ لائن پراجیکٹ (427 کلومیٹر) کیلئے ٹرانسپورٹیشن ٹیرف کی منظوری دی۔ اوگرا کی طرف سے ضابطہ کی ضروری کارروائی کے بعد ٹیرف کی توثیق کی جائے گی۔ یہ منصوبہ تین حصوں میں مکمل کیا جائے گا جو ماحول دوست ہے اور اس سے ایندھن کی محفوظ ترسیل ہو گی۔ یہ منصوبہ ایندھن کا اضافی ذخیرہ فراہم کرے گا اور وسطی و شمالی پنجاب اور خیبرپختونخوا میں اہم ترسیلی مراکز کو ایندھن فراہم کر سکے گا۔

(جاری ہے)

ای سی سی نے ہدایت کی کہ مستقبل میں تمام پائپ لائن منصوبہ جات کیلئے کابینہ کی منظوری ضروری ہو گی۔ نیشنل گرڈ سسٹم کے ذریعے بجلی کی مستحکم اور قابل بھروسہ فراہمی اور این ٹی ڈی سی نظام کی استعداد بڑھانے کیلئے ای سی سی نے این ٹی ڈی سی منصوبہ جات کیلئے مقامی بینکوں سے 9846 ملین روپے کی مالیاتی سہولت کیلئے حکومت پاکستان خود مختار گارنٹی کے اجراء کی بھی منظوری دی۔

متعلقہ عنوان :