حکمران احتساب میں نہیں اللہ کی پکڑ میں آئے ،

نوازشریف پہلے سیاستدان نہیں جو جیل جائیں گے‘عام آدمی کے پاس گیس ‘ ہے نہ بجلی اور پانی ‘ جنوبی پنجاب کے لوگ جانتے ہیں ملتان میں میٹرو کتنی کامیاب ہوئی‘ملک میں پینے کا پانی نہیں ، لوگ ہیپاٹائٹس سے مر رہے ہیں‘پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں ‘عمران خان کے ساتھ مل کر الیکشن لڑیں گے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کا رحیم یار خان میں پریس کانفرنس سے خطاب

جمعہ اپریل 16:49

حکمران احتساب میں نہیں اللہ کی پکڑ میں آئے ،
رحیم یار خان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) سربراہ عوامی مسلم لیگ شیخ رشید نے کہا ہے کہ حکمران احتساب میں نہیں اللہ کی پکڑ میں آئے ، نوازشریف پہلے سیاستدان نہیں جو جیل جائیں گے‘عام آدمی کے پاس گیس ‘ ہے نہ بجلی اور پانی ‘ جنوبی پنجاب کے لوگ جانتے ہیں ملتان میں میٹرو کتنی کامیاب ہوئی‘ملک میں پینے کا پانی نہیں ، لوگ ہیپاٹائٹس سے مر رہے ہیں‘پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں ‘عمران خان کے ساتھ مل کر الیکشن لڑیں گے ۔

جمعہ کو رحیم یار خان میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ عام آدمی کے پاس گیس ، بجلی اور نہ ہی پانی ہے۔ جنوبی پنجاب کے لوگ جانتے ہیں ملتان میں میٹرو کتنی کامیاب ہوئی،ملک میں پینے کا پانی نہیں ، لوگ ہیپاٹائٹس سے مر رہے ہیں۔

(جاری ہے)

سربراہ عوامی مسلم کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف ووٹ کو عزت دو کی بات کررہے ہیں،،ووٹ دیتے وقت ہم آنکھوں پر پٹیاں باندھ لیتے ہیں،چھوٹی عمر میں ہی نوازشریف کے بچے ارب پتی بن گئے ، ہم پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں اورعمران خان کے ساتھ مل کر الیکشن لڑیں گے جبکہ سازش کے تحت اداروں کے خلاف باتیں کی جارہی ہیں۔

شیخ رشید نے کہا کہ جب تک کرپٹ لوگ نہیں نکلیں گے تب تک غیر آئینی اقدام اور طالع آزماؤں کا خطرہ رہے گا۔انہوں نے کہا کہ کیا کوئی آدمی سوچ سکتاہے کہ جج کے گھر پر ایک دن میں دو مرتبہ فائرنگ ہو، ایسے ملک میں غریب کیسے محفوظ ہوسکتے ہیں، گوجرانوالہ کے ڈی سی کو پنکھے سے لٹکا دیا، پھر کہتے ہیں بہت زبردست گورننس ہے۔شیخ رشید کا کہنا تھاکہ حکمران احتساب میں نہیں ، ختم نبوت کیخلاف چور دروازے سے کرنے پر اللہ کی پکڑ میں آئے ہیں، سوائے میرے سارے مولویوں نے ختم نبوت کے خلاف ووٹ دیا اور مولانا فضل الرحمان نے پہلی مرتبہ اس معاملے پر میرا شکریہ ادا کیا۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ کا مزید کہنا تھا کہ ملک میں پینے کا پانی نہیں ، لوگ ہیپاٹائٹس سے مررہے ہیں، لوگ آج جنوبی پنجاب کی بات کرتے ہیں، میں زمانہ طالب علمی سے کرتے ہیں، پنجاب کو تقسیم کرکے اس کی بدمعاشی کو ختم کیا جائے، سارے ممبران قومی اسمبلی میں بھیڑ بکریاں ہیں، دنیا کی تاریخ میں کسی آدمی کا سپیکر اتنی مرتبہ بند نہیں ہوا جتنا میرا ہوا۔