چیف جسٹس اصغر خان کیس میں اس وقت کے آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کی سزا خود متعین کریں،

چودھری جعفر اقبال پارسائی اور احتساب کا دعویٰ کرنیوالے ادارے کا اصلی چہرہ اور عزائم قوم دیکھ چکی، نواز شریف پر جھوٹے الزامات کے بعد چیئرمین نیب اپنے مستقبل بارے خود فیصلہ کریں، وقت ثابت کرے گا پہلے کی طرح اس بار بھی نواز شریف پر بنائے گئے مقدمے جھوٹے ہیں، صحافیوں سے گفتگو

بدھ مئی 19:19

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے رہنماء اور رکن قومی اسمبلی چودھری جعفراقبال نے کہا ہے کہ چیف جسٹس اصغر خان کیس میں اس وقت کے آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کی سزا خود متعین کریں، پارسائی اور احتساب کا دعویٰ کرنیوالے ادارے کا اصلی چہرہ اور عزائم قوم دیکھ چکی، نواز شریف پر جھوٹے الزامات کے بعد چیئرمین نیب اپنے مستقبل بارے خود فیصلہ کریں،وقت ثابت کرے گا پہلے کی طرح اس بار بھی نواز شریف پر بنائے گئے مقدمے جھوٹے ہیں ۔

پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چودھری جعفر اقبال نے کہا کہ محمد نواز شریف پر چیئر نیب کے جھوٹے الزامات پر بہت افسوس ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2016 میں بھی جب ایسی خبر آئی تھی تو سٹیٹ بینک نے اسی وقت ہی اس کی تردید کردی تھی۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب عہدہ سنبھالنے کے بعد اپنے چند دن کے بیانات دیکھیں اور پھر اپنے مستقبل کے بارے میں خود فیصلہ کریں ۔

پارسائی اور احتساب کا دعوی کرنیوالے ادارے کا اصلی چہرہ اور عزائم عوام دیکھ چکی ہے ۔انہوں نے کہا کہ وقت ثابت کرے گا پہلے کی طرح اس بار بھی نواز شریف پر بنائے گئے مقدمے جھوٹے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جس طرح چیف جسٹس اس وقت ملک کے بیشتر فیصلے کر رہے ہیں اور صحت، تعلیم کے حوالے سے خود احکامات جاری کر رہے ہیں اسی طرح اصغر خان کیس میں بھی چیف جسٹس خود کریں یہ معاملہ حکومت کے کندھے پر نہ ڈالیں۔ انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس اصغر خان کیس میں اس وقت کے آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کی سزا خود متعین کریں۔