ملک کی ترقی کیلئے جمہوریت کا تسلسل ناگزیر ہے،صرف عوام کی منتخب حکومت ہی ملک کو ترقی کے راستے پر گامزن کر سکتی ہے، ماضی میں غیر جمہوری حکومتیں ملکی مسائل حل کرنے میں ناکام ہوچکی ہیں، تمام تر مشکلات کے باوجود موجودہ حکومت نے بہت سے ترقیاتی کام کئے،

کراچی میں امن کی بحالی ہماری سب سے بڑی کامیابی ہے، عوامی نمائندوں اور حکومتوں کی کارکردگی کا فیصلہ کرنے کا اختیار عوام کے پاس ہونا چاہئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا این ای ڈی یونیورسٹی آف سائنس و ٹیکنالوجی میں نیشنل انکیوبیشن سنٹر کی افتتاحی تقریب سے خطاب

جمعہ مئی 23:02

ملک کی ترقی کیلئے جمہوریت کا تسلسل ناگزیر ہے،صرف عوام کی منتخب حکومت ..
کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ملک کی ترقی کیلئے جمہوریت کا تسلسل ناگزیر ہے،صرف عوام کی منتخب حکومت ہی ملک کو ترقی کے راستے پر گامزن کر سکتی ہے کیونکہ ماضی میں غیر جمہوری حکومتیں ملکی ترقی اور مسائل حل کرنے میںناکام ہوچکی ہیں، تمام تر مشکلات کے باوجود موجودہ حکومت نے بہت سے ترقیاتی کام کئے، کراچی میں امن کی بحالی ہماری سب سے بڑی کامیابی ہے، اپنے نمائندے منتخب کرنے کا اختیار پاکستان کے عوام کو حاصل ہونا چاہئے۔

وہ جمعہ کو کراچی میں این ای ڈی یونیورسٹی آف سائنس و ٹیکنالوجی میں نیشنل انکیوبیشن سنٹر کے افتتاح کے موقع پر خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمن نے بھی خطاب کیا جبکہ تقریب میں وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل، میئر کراچی وسیم اختر سمیت بڑی تعداد میں اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ این ای ڈی یونیورسٹی میں نیشنل انکیوبیشن سنٹر کا افتتاح کر کے خوشی ہوئی ہے اس یونیورسٹی سے میری بڑی یادیں وابستہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ جمہوریت کا ہی ثمر ہے کہ آج ہائی ویز،پاور پلانٹس،ایئر پورٹس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی سمیت ملک بھر میں بڑے بڑے منصوبے پایہ تکمیل تک پہنچ چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل انکیوبیشن سنٹر پر 2.5 ارب روپے کی لاگت آئی جس سے نوجوان کاروباری افراد کو اپنا روزگار شروع کرنے کے مواقع فراہم ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی خوشحال، پرامن اور ترقی کرے گا توپاکستان خوشحال پرامن اور ترقی کے راستے پر گامزن ہو گا۔

پورے پاکستان سے لوگ روزگار کے سلسلے میں کراچی آتے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے کراچی میں زندگی کی رونقیں اور اس کی روشنیاں بحال کیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق وزیراعظم محمد نوازشریف نے کابینہ کا اجلاس کراچی میں بلا کر کراچی کو جرائم سے پاک کرنے کا عزم کیا، صوبائی حکومت اور ایم کیو ایم سمیت تمام جماعتوں کو اعتماد میں لیا۔ کراچی آپریشن کے بعد جرائم کی شرح کم ہوئی اور روشنیاں بحال ہوئیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ خوشی ہے کہ ہر ہفتے ایک منصوبے کا افتتاح کر رہے ہیں، اگر ملک میں جمہوری حکومت نہ ہوتی تو ملک اتنی ترقی نہ کرتا، ہم نے ثابت کیا کہ جمہوری حکومت ہی ملک کو چیلنجوں سے نکالنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کی ترقی کراچی کی ترقی سے جڑی ہوئی ہے۔ تمام تر مشکلات کے باوجود موجودہ حکومت نے بہت سے ترقیاتی کام کئے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فروغ کیلئے نئے آئی ٹی پارکس بنائے جائیں گے، ہم نے گزشتہ پانچ سالوں کے دوران بجلی کے کئی نئے منصوبے لگائے، انفراسٹرکچر شاہراہوں، ایئر پورٹس سمیت دیگر منصوبے نہ صرف شروع بلکہ مکمل کئے۔ وزیراعظم نے کہا کہ جمہوریت کی خامیاں جمہوریت سے ہی دور ہو سکتی ہے۔ وزیراعظم نے اس موقع پر سالانہ بجٹ 2018-19پیش کرنے پر وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی تعریف کی اور کہا کہ بجٹ میں حکومت نے آئی ٹی مصنوعات پر ٹیکس کی شرح کم کرنیکی تجویز دی ہے جبکہ ٹیکنالوجی کیلئے خصوصی اقتصادی زونز قائم کئے جائیں گے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ مفتاح اسماعیل آئندہ عام انتخابات میں کراچی سے حصہ لیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہر قسم کے نئے چیلنجز سے نمٹنے کیلئے تیار ہے، موجودہ حالات میں فیصلے کرنے مشکل ہو گئے ہیں۔ عوامی نمائندوں اور حکومتوں کی کارکردگی کا فیصلہ کرنے کا اختیار عوام کے پاس ہونا چاہئے۔قبل ازیں وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمان نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگلا انکیوبیشن سنٹر کوئٹہ میں قائم کیا جائیگا۔انہوں نے کہا کہ ملک میں انٹر نیٹ استعمال کرنے والے صارفین کی تعداد میں سالانہ ایک ملین کا اضافہ ہو رہا ہے۔