سپریم کورٹ نے پولیس افسروں کی آئوٹ آف ٹرن پروموشن فیصلے کیخلاف نظرثانی درخواستیں خارج کر کے کیس نمٹا دیا

سروس ٹربیونل عدالتی فیصلے پرعملدرآمداپیلوں کاجلدفیصلہ کرے‘ٹربیونل آئی جی کے احکامات کیخلاف اپیلوں کافیصلہ 2 ماہ میں کرے‘ پولیس افسروں کی پروموشن سے متعلق حکومت قواعدبناسکتی ہے‘سیکرٹری داخلہ،اسٹیبلشمنٹ ڈویژن اورآئی جی پنجاب حکم پرعمل کریں‘ رجسٹرارسپریم کورٹ فیصلہ متعلقہ حکام کوبھیجیں‘بلوچستان پولیس کی عملدرآمد سے متعلق کیس کوعلیحدہ سناجائیگا‘عدالتی حکم

اتوار مئی 18:20

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) سپریم کورٹ آف پاکستان نے پولیس افسروں کی آ?ٹ آف ٹرن پروموشن فیصلے کیخلاف نظرثانی درخواستیں خارج کر دی۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں پولیس افسروں کی آئوٹ آف ٹرن پروموشن فیصلے کیخلاف نظرثانی کیس کی سماعت کی۔۔سپریم کورٹ نے کیس کو نمٹاتے ہوئے فیصلہ سنا دیاکہ عدالتی فیصلوں کے ذریعے پروموشن پانے والے افسروں کی ترقیاں بھی واپس لی جائیں۔

(جاری ہے)

آئوٹ آف ٹرن ترقی پانیوالے افسروں کوبیج میٹس کے برابرترقی دی جائے۔۔عدالت نے حکم دیا کہ سروس ٹربیونل عدالتی فیصلے پرعملدرآمداپیلوں کاجلدفیصلہ کرے۔ٹربیونل آئی جی کے احکامات کیخلاف اپیلوں کافیصلہ 2 ماہ میں کرے۔عدالتی حکم میں کہا گیا کہ پولیس افسروں کی پروموشن سے متعلق حکومت قواعدبناسکتی ہے۔سیکریٹری داخلہ،اسٹیبلشمنٹ ڈویژن اورآئی جی پنجاب حکم پرعمل کریں۔۔عدالت نے ہدایات جاری کی کہ رجسٹرارسپریم کورٹ فیصلہ متعلقہ حکام کوبھیجیں۔۔بلوچستان پولیس کی عملدرآمد سے متعلق کیس کوعلیحدہ سناجائے گا۔