نواز شریف کاممبئی حملوں سے متعلق بیان ! تحریک انصاف نے سابق وزیراعظم کیخلاف بڑا فیصلہ کرلیا

پنجاب اسمبلی میں نوازشریف کے خلاف آرٹیکل (6) کے تحت ٹرائل کیلئے قرارداد جمع کرادی گئی لاہورہائی کورٹ میں غداری کے مقدمے کے اندارج کے لیے رٹ دائر

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر مئی 12:18

نواز شریف کاممبئی حملوں سے متعلق بیان ! تحریک انصاف نے سابق وزیراعظم ..
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔14 مئی۔2018ء) پنجاب اسمبلی میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف آرٹیکل (6) کے تحت ٹرائل کیلئے قرارداد جمع کرادی گئی ہے ۔ پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرمیاں محمودالرشید کی جانب سے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف آرٹیکل (6) کے تحت ٹرائل کیلئے قرارداد بھی جمع کرادی گئی۔۔قرارداد کے متن کے مطابق نوازشریف کلبھوشن اورکشمیرمیں مظالم پرخاموش اورریاست کے خلاف زہراگل رہے ہیں، نوازشریف نے ہوس اقتدارمیں ریاست کے خلاف بغاوت کی اورملکی سالمیت پرحملے شروع کردیئے، نوازشریف کا درآمد شدہ بیانیہ پاکستان کوعالمی دباﺅمیں لانے کی مکروہ کوشش ہے۔

قرارداد میں مزید کہا گیا کہ نوازشریف دشمن عالمی طاقتوں کے آلہ کاربن کرملک میں انتشارکی فضا بنارہے ہیں، بھارت دانستہ طورپرعدم تعاون کرکے ممبئی حملہ کیس کے ٹرائل میں رکاوٹ رہا جب کہ ریاستی ادارے قابل احترام ہیں اور ملکی تحفظ کے ضامن ہیں جو اس ہرزہ سرائی کو مسترد کرتے ہیں۔

(جاری ہے)

دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کروانے کے لیے لاہور ہائیکورٹ میں 2 درخواستیں دائر کردی گئیں۔

لاہور ہائیکورٹ میں نواز شریف کے خلاف پہلی درخواست پاکستان عوامی تحریک کے راہنما خرم نواز گنڈاپور کی جانب سے ایڈووکیٹ اشتیاق چوہدری نے دائر کی۔۔عدالت میں دائر درخواست میں نواز شریف،، وزارت داخلہ اور وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے کو فریق بنایا گیا ہے، ساتھ ہی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف نے پاکستان اور قومی سلامتی کے اداروں کو بدنام کیا۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ نواز شریف کا ممبئی حملوں سے متعلق بیان، ملک سے غداری کے مترادف ہے، لہٰذا عدالت نواز شریف کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت غداری کی کارروائی کا حکم جاری کرے۔دوسری جانب لاہور ہائی کورٹ میں پاکستان زندہ باد پارٹی کے ایڈووکیٹ آفتاب ورک کی جانب سے نواز شریف کے خلاف غداری کے مقدمے کے اندراج کے لیے درخواست دائر کی گئی۔

اس درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ نواز شریف نے پاکستان اور قومی اداروں کو بدنام کیا اور ان کا بیان غداری کے مترادف ہے۔درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ وہ نواز شریف کے اس بیان کےخلاف غداری کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دے۔بعد ازاں عدالت نے پاکستان عوامی تحریک کے راہنما خرم نواز گنڈا پور کی جانب سے دائر کردہ درخواست سماعت کے لیے مقرر کردی، جس پر لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شمس محمود مرزا 15 مئی کو سماعت کریں گے۔