فیصل آباد، مکان خالی کروانے کی رنجش پر ما لک مکان کی13سالہ بیٹی کو اغواء کر لیا گیا، پولیس ملزمان کی ضما نتی بن گئی

منگل مئی 18:02

فیصل آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) ظلم کی انتہا ء کر ایہ کا مکان خالی کروانے کی رنجش پر ما لک مکان کی13سالہ بیٹی کو اغواء کر لیا گیا پولیس بھی ملزمان کی ضما نتی بن گئی ۔تفصیل کے مطا بق مقصودہ آباد سلطان چوک گلی نمبر 2 فیصل آباد کی رہائشی فوزیہ پروین نے بتایا کہ میں شادی شدہ خاتون ہوں اور دو بچوں کی ماں ہوں ،امان فاطمہ میری چھوٹی بیٹی ہے جسکی عمر 13/14 سال ہے ،مورخہ 8 مئی 2018 کو دوپہر کو ایک بجے میری بیٹی امان فاطمہ گھر سے سودا سلف لینے کیلئے بازار گئی توشہزاد ولد نامعلوم ، شفیق ولد نامعلوم ، یاسین ولد نامعلوم ، ساجدہ پروین سکنہ ٹالی شاہ دربار منڈی کوارٹر فیصل آباد جنہوں نے زبردستی میری بیٹی کو کار میں ڈال لیا۔

اس واقع کے گواہ محسن ولد بشیر احمد، کاشف ولد اکرم نے جب دیکھا تواغوا کاروں کے پیچھے دور تک بھاگے مگر ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے اور جاتے ہوئے آتشیں اسلحہ لہراتے ہوئے قتل کی دھمکیاں دیتے ہوئے فرار ہوگئے ۔

(جاری ہے)

بعدا زاں فون نمبر03051060828 پر 03073142241 مسلسل قتل کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر میری بچی برآمد نہ کروائی گئی تومیں سی پی او آفس کے سامنے دوسری بیٹی کے ہمراہ خود سوزی کر لونگی جس کی تمام تر ذمہ داری ضلعی انتظامی پر ہو گئی ۔ انہوں نے کہا کہ میری وزیراعلیٰ پنجاب ،صوبائی وزیر قانون سے اپیل ہے کہ مجھے میری پیٹی واپس دلوائی جائے اور ملزمان کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے ۔