کچھ موقع پرستوں کی غداری کے باوجود پنجاب میں(ن) لیگ کے گڑھ پر کوئی اثر نہیں پڑے گا‘ سینیٹر مشاہد اللہ خان

جو لوگ (ن) لیگ کو چھوڑ کر پی ٹی آئی میں شامل ہوئے وہ نہ ہی(ن) لیگ کے پرانے محافظ ہیں اور نہ ہی وہ حقیقی منتخب نمائندے ہیں‘ نیوز لیکس معاملے پر دبا ئومیں آکر نواز شریف مستعفی ہوجاتے تو دہشت گردی اور بجلی و گیس کی لوڈ شیڈنگ کے خلاف جاری طویل جدوجہد ادھوری رہ جاتی‘گفتگو

پیر مئی 18:39

کچھ موقع پرستوں کی غداری کے باوجود پنجاب میں(ن) لیگ کے گڑھ پر کوئی اثر ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 مئی2018ء) مسلم لیگ(ن)کے سیکریٹری اطلاعات سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا ہے کہ کچھ موقع پرستوں کی غداری کے باوجود پنجاب میں(ن) لیگ کے گڑھ پر کوئی اثر نہیں پڑے گا‘ جو لوگ (ن) لیگ کو چھوڑ کر تحر یک انصاف میں شامل ہوئے وہ نہ ہی(ن) لیگ کے پرانے محافظ ہیں اور نہ ہی وہ حقیقی منتخب نمائندے ہیں‘ نیوز لیکس معاملے پر دبا میں آکر نواز شریف مستعفی ہوجاتے تو دہشت گردی اور بجلی و گیس کی لوڈ شیڈنگ کے خلاف جاری طویل جدوجہد درمیان میں ہی ادھوری رہ جاتی‘ تحریک انصاف کو آئندہ انتخابات کے لیے ایک حکمت عملی کے تحت فیوریٹ بنانے کے باوجود مسلم لیگ (ن) اپنے مشن میں کامیاب اور آج بھی عوام کی فیورٹ جماعت ہے اگر کسی کو اس بات پر شبہ ہے تو وہ آزادانہ طور پر اس حوالے سے ایک سروے کروالے۔

(جاری ہے)

اپنے ایک انٹر ویو میں مسلم لیگ(ن)کے سیکریٹری اطلاعات سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا کہ پارٹی کے تاحیات قائد نواز شریف کے فیصلوں اور حکمتِ عملی کی وجہ سے پاکستان کو توانائی بحران اور دہشت گردی کی لعنت سے نجات ملی اور اسی نے 25 جولائی کے انتخابات کی جانب جانے کے لیے درست پلیٹ فارم فراہم کیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو وزارتِ عظمی کے عہدے پر اپنی آئینی مدت پوری نہیں کرنے دی گئی اور سپریم کورٹ نے انہیں پاناما پیپرز کیس میں گھر بھیج دیا، لیکن مسلم لیگ (ن)کی حکومت نے متعدد چیلنجز کے باوجود اپنی مدت پوری کی ہے اور بالآخر مسلم لیگنے ملک کو درپیش مسائل کو حل کر دیا ہے ۔