قومی سلامتی کمیٹی کا فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس اور دیگر بین الاقوامی اداروں کے ساتھ پاکستان کے مل کر کام کرنے کے عزم کا اعادہ

قومی سلامتی کمیٹی کا 25 واں اجلاس وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک کی زیر صدارت وزیراعظم ہائوس میں منعقد ہوا

جمعہ جون 16:31

قومی سلامتی کمیٹی کا فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس اور دیگر بین الاقوامی ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) قومی سلامتی کمیٹی نے مشترکہ اہداف اور مقاصد کے حصول کے لئے فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) اور دیگر بین الاقوامی اداروں کے ساتھ پاکستان کے مل کر کام کرنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔ 25 ویں قومی سلامتی کمیٹی کا 25 واں اجلاس وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک کی زیر صدارت جمعہ کو وزیراعظم ہائوس میں منعقد ہوا۔

اجلاس میں وزیر دفاع و خارجہ عبدالله حسین ہارون، وزیر خزانہ محترمہ شمشاد اختر، وزیر داخلہ محمد اعظم خان، وزیر قانون،، اطلاعات و نشریات سید علی ظفر، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات، چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ،، پاک بحریہ کے سربراہ ایڈمرل ظفر محمود عباسی، پاک فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل مجاہد انور خان، قومی سلامتی کے مشیر لیفٹیننٹ جنرل ناصر خان جنجوعہ، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار اور سینئر سول و فوجی حکام نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

اجلاس کے دوران ملک میں سلامتی کی مجموعی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر خزانہ شمشاد اختر نے اجلاس کو فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے پیرس میں آئندہ اجلاس اور ایف اے ٹی ایف کے تقاضوں کو پورا کرنے کے لئے ملک کی طرف سے اٹھائے جانے والے اب تک کے انتظامی اور قانونی اقدامات کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس فریم ورک کے تحت ملک کی بین الاقوامی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کے حوالے سے اٹھائے گئے مختلف اقدامات کا جائزہ لیتے ہوئے اجلاس میں اب تک کی پیشرفت پر اطمینان کا اظہار کیا گیا۔

کمیٹی نے ہدایت کی کہ آئندہ اجلاس میں ایف اے ٹی ایف سیکریٹریٹ کو پیش رفت سے آگاہ کیا جائے۔ کمیٹی نے مشترکہ اہداف اور مقاصد کے حصول کے لئے ایف اے ٹی ایف اور دیگر بین الاقوامی اداروں کے ساتھ پاکستان کے مل کر کام کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔ وزیراعظم نے امریکی نائب صدر مائیک پینس کے ساتھ 7 جون کو ہونے والی اپنی ٹیلیفونک گفتگو کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔