سپریم کورٹ نے وزیر اعظم عمران خان کی نااہلی سے متعلق درخواست خارج کردی

لاہور ہائی کورٹ میں دھرنے کے خلاف درخواستوں پر سماعت کیلئے فل بنچ تشکیل

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر ستمبر 12:39

سپریم کورٹ نے وزیر اعظم عمران خان کی نااہلی سے متعلق درخواست خارج کردی
اسلام آباد/لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔24 ستمبر۔2018ء) سپریم کورٹ نے وزیر اعظم عمران خان کی نااہلی سے متعلق درخواست خارج کردی. چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے عمران خان کی نااہلی کی سماعت کی. جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ یہ درخواست تو پہلے ہی غیر موثر ہو چکی ہے. وکیل صفائی نے کہا کہ ہم نے اسی نوعیت کا ایک مقدمہ ہائی کورٹ میں دائر کر رکھا ہے.

جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ کسی اور قانونی فورم سے رجوع کرنے کا آپ کو مکمل اختیار حاصل ہے. چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کسی اور فورم میں جانا چاہیں تو جا سکتے ہیں.

(جاری ہے)

عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے کہا کہ ایسی درخواست جو دوسری ماتحت عدالتوں میں ہے وہ قابل پیش رفت نہیں رہی. سماعت کے دوران بیرسٹر دانیال چوہدری نے عمران خان کی نااہلی سے متعلق اپنی پٹیشن واپس لے لی، جس پر عدالت نے درخواست خارج کردی.

عدالت قراردیا کہ جس اسمبلی مدت میں نااہلی کی درخواست دائر کی گئی وہ ختم ہو چکی ہے اور گزشتہ اسمبلی اپنی میعاد پوری کر چکی ہے. واضح رہے کہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما بیرسٹر دانیال چوہدری نے عمران خان کے خلاف کاغذات نامزدگی میں بیٹی ظاہر نہ کرنے کے خلاف گزشتہ سال درخواست دائر کی تھی. درخواست میں صادق اور امین نہ ہونے کی بنیاد پر عمران خان کی تاحیات نااہلی کی استدعا کی گئی تھی.

دوسری جانب لاہور ہائی کورٹ نے 2014ءکے دھرنے پر وزیراعظم عمران خان اور عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری کے خلاف درخواستوں پر سماعت کیلئے فل بنچ تشکیل دے دیاہے. لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس انوارالحق کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ درخواستوں پر سماعت کرے گا، جس کے دیگر اراکین میں جسٹس فیصل زمان خان اور جسٹس عاطر محمود شامل ہیں. بنچ کے رکن جسٹس کاظم رضا شمسی کے ریٹائرڈ ہونے کی وجہ سے فل بنچ تحلیل ہو گیا تھا، 2014ءمیں عمران خان اور طاہر القادری کے خلاف درخواستیں اے کے ڈوگر سمیت دیگر نے دائر کی تھیں.

درخواستوں میں عوامی تحریک، جماعت اسلامی، پیپلزپارٹی سمیت دیگر جماعتوں کو پارٹی بنایا گیا ہے. درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ عدالتی حکم کے باوجود عمران خان اور طاہر القادری نے لاہور سے اسلام آباد میں دھرنا دیا، انہوں نے طویل دھرنا دے کر توہین عدالت کی. درخواست گزار نے استدعا کی ہے کہ عدالت عمران خان اور طاہر القادری کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کرے.