امپورٹڈ موبائل فونز پر عائد کیے گئے ٹیکسز کی شرح کی تفصیلات جاری کر دی گئیں

ایک سال میں ایک شہری کو بیرون ممالک سے 5 موبائل فونز منگوانے کی اجازت، ایک کو چھوڑ کر باقی 4 موبائل فونز پر 4 ہزار سے لے کر 83 ہزار روپے تک ٹیکس ادا کرنا ہوگا

muhammad ali محمد علی منگل دسمبر 19:41

امپورٹڈ موبائل فونز پر عائد کیے گئے ٹیکسز کی شرح کی تفصیلات جاری کر ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 دسمبر2018ء) حکومت کی جانب سے امپورٹڈ موبائل فونز پر عائد کیے گئے ٹیکسز کی شرح کی تفصیلات جاری کر دی گئیں، ایک سال میں ایک شہری کو بیرون ممالک سے 5 موبائل فونز منگوانے کی اجازت، ایک کو چھوڑ کر باقی 4 موبائل فونز پر 4 ہزار سے لے کر 83 ہزار روپے تک ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانی پاکستان آتے ہوئے اپنے ساتھ موبائل فون لا سکتے ہیں تاہم اضافی فون لانے پر ٹیکس عائد کیا گیا ہے۔

منگل کے روز کیے گئے اپنے ٹویٹ میں وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین نے کہا کہ پاکستان میں سالانہ 2 ارب ڈالرز کے موبائل فون درآمد کیے جا رہے ہیں، ان پر ٹیکس ادا کیا جانا ضروری ہے۔

(جاری ہے)

وزیر اطلاعات کا کہنا ہے کہ کہ 60 ڈالر سے کم قیمت کے موبائل فون پر ٹیکس نہ ہونے کے برابر ہے۔ جبکہ مہنگے موبائل فون پر 38 فیصد ٹیکس ہے۔ اس حوالے سے وزارت خزانہ کی جانب سے مزید تفصیلات بھی جاری کی گئی ہیں۔

وزارت خزانہ کی جانب سے امپورٹڈ موبائل فونز پر عائد کیے گئے ٹیکسز کی شرح کی تفصیلات جاری کی گئی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ بیرون ممالک سے پاکستان آنے والی افراد اپنے ساتھ ایک سال کے دوران 5 موبائل فونز پاکستان لا سکتے ہیں۔ تاہم صرف ایک غیر استعمال شدہ موبائل فون کو چھوڑ کر باقی موبائل فونز پر ٹیکسس ادا کرنا ہوں گے۔ تاہم جس موبائل فون پر ٹیکس عائد نہیں ہوگا، اسے بھی 30 روز کے اندر اندر پی ٹی اے کی جانب سے وضح کردہ طریقہ کار کے تحت رجسٹر کروانا ہوگا۔

جبکہ اس غیر استعمال شدید موبائل فون کے علاوہ شہری کے پاس اگر کوئی ایسا موبائل فون بھی ہوا جو غیر ملکی سم پر چل رہا ہے، تو اس پر بھی ٹیکس عائد نہیں کیا جائے گا۔ ٹیکس صرف بنا سم والے استعمال شدہ موبائل فونز یا نئے موبائل فونز پر عائد ہوگا۔ بیرون ممالک سے لائے جانے والے یا منگوائے جانے والے موبائل فونز پر کل 7 طرح کے ٹیکس عائد کیے جائیں گے۔

بیرون ممالک سے لائے یا منگوائے جانے والے موبائل فونز پر کسٹم ڈیوٹی، ریگولیٹری ڈیوٹی، سیلز ٹیکس، ایڈیشنل سیلز ٹیکس، آئی ٹی ڈیوٹی، موبائل لیوی اور صوبائی ٹیکس نامی ٹیکسز عائد کیے جائیں گے۔ سیلز ٹیکس کی شرح 15 سو روپے، کسٹم ڈیوٹی 250 روپے، سیلز ٹیکس موبائل فون کی قیمت کا 3 فیصد، آئی ٹی ٹیکس 9 فیصد جبکہ پنجاب میں 0.9 فیصد صوبائی ٹیکس عائد ہوگا۔

ٹیکس کا نفاذ 50 ڈالرز یعنی 7 ہزار روپے یا اس سے زائد مالیت کے موبائل فونز پر ہوگا۔ کم سے کم ٹیکس 50 ڈالرز والے موبائل فون پر عائد ہوگا جو 4641 روپے بنتا ہے۔ جبکہ سب سے زیادہ ٹیکس 15 سو ڈالرز والے موبائل فونز پر عائد ہوگا جو کہ 83 ہزار 420 روپے بنتا ہے۔ کتنی مالیت کے موبائل فون پر کتنا ٹیکس عائد ہوگا، درج ذیل تفصیلات دیکھیں: