فردوس باجی اگر منڈی بہاؤالدین میں کارنر میٹینگ تھی تو خوف سے جلسہ گاہ میں پانی کیوں چھوڑ دیا تھا ، طلال چوہدری

انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو جج صاحب کے گھر جانے کے ساتھ ساتھ نواز شریف جیل سے باہر ہوتا ، معاون خصوصی کے بیان پر رد عمل

بدھ جولائی 13:55

فردوس باجی اگر منڈی بہاؤالدین میں کارنر میٹینگ تھی تو خوف سے جلسہ گاہ ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 17 جولائی2019ء) پاکستان مسلم لیگ (ن)کے رہنما طلال چوہدری نے کہا ہے کہ فردوس باجی اگر منڈی بہاؤالدین میں کارنر میٹینگ تھی تو خوف سے جلسہ گاہ میں پانی کیوں چھوڑ دیا تھا ۔ ایک بیان میں انہوںنے کہاکہ فردوس باجی مریم نواز کا خوف آپ کو سونے بھی نہیں دیتا ، روز صبح صبح مریم نواز کا ورد ۔ انہوںنے کہاکہ فردوس باجی عمران نیازی پاکستانیوں کے دل کی بد دعا بن چٴْکا ہے ،فردوس باجی انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو جج صاحب کے گھر جانے کے ساتھ ساتھ نواز شریف جیل سے باہر ہوتا ۔

انہوںنے کہاکہ فردوس باجی انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو بسوں اور دوائیوں کی کرپشن میں آپ جیل میں ہوتی ۔ انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں اطلاق آج اگر ہوتا تو علیمہ باجی غیر قانونی جائیداد کا جرمانہ نہ دیتی جیل میں ہوتیں ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں اطلاق آج اگر ہوتا تو جہانگیر ترین تسلیم شدہ مالی اور باورچیوں کے نام پر منی لانڈرنگ کے جرم میں جیل میں ہوتا ۔

انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو آج روٹی پندرہ روپے اور نان بیس روپے میں عمران نیازی جیل میں ہوتا ۔انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو ایک کھرب کے پشاور کے میٹرو کے کھودنے والے سلاخوں کے پیچھے ہوتے ۔انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو کیلیفورنیاں کی عدالت کے فیصلے کے تحت عمران نیازی جیل میں ہوتا ۔

انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق آج اگر یکساں ہوتا تو پارلیمنٹ پہ حملہ کرنے والا وزیراعظم نہ ہو تا ۔انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق اگر یکساں ہوتا تو ملک کو آئی ایم میں گروی رکھنے والا آج جیل میں ہوتا ۔انہوںنے کہاکہ انصاف کا اطلاق اگر یکساں ہوتا تو اٹھاراں جعلی اکاؤنٹس سے منی لانڈرنگ کرنے والا عمران نیازی جیل میں ہوتا۔