کرتار پور کوریڈورکے حوالے سے وفاقی و صوبائی اداروں کی کوآرڈی نیشن کونسل کا اجلاس،معاملات کی حتمی تقسیم

ہفتہ ستمبر 15:05

کرتار پور کوریڈورکے حوالے سے وفاقی و صوبائی اداروں کی کوآرڈی نیشن ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 14 ستمبر2019ء) کرتار پور کوریڈورکے حوالے سے وفاقی و صوبائی اداروں کی کوآرڈی نیشن کونسل کا اجلاس ہوا، جس میںمعاملات کی حتمی تقسیم کی گئی۔اجلاس میںچیئر مین متروکہ وقف املاک بورڈ ڈاکٹر عامر احمد، سیکرٹری طارق وزیر خان، ایڈیشنل سیکرٹری وزارت مذہبی امور، حج،بین المذاہب ہم آہنگی محمد دائود نے شرکت کی ۔

(جاری ہے)

اجلاس میں سیکٹر کمانڈر ایف ڈبلیو او بریگیڈئیر عاطف، ڈپٹی کلکٹر کسٹمز، ملکی سلامتی کے حامل اداروںکے ساتھ ساتھ پنجاب پولیس ،سپیشل برانچ لاہور کے افسران بھی شریک ہوئے، بھارت سے روزانہ 5ہزار یاتری اذان فجر سے نماز مغرب تک کے دورانیہ کے لئے کرتار پور آئیں گے،ٹرمینل کی مستقل دیکھ بھال اور مرمت ،ٹرانسپورٹ کا نظام ایف ڈبلیو اور کی کمپنی نوبل گلوبل کے سپرد کر دیا گیا ،بھارتی شریوں سے پاسپورٹ لے کر انہیں راہداری کارڈ دیا جائے گا، جس کو واپس کر کے بھارتی سکھ یاتری پاسپورٹ وصول کر لیں گے، نوبل گلوبل کی گاڑیاں سکھ یاتریوں کو مخصوص مقام سیلے کر واپسی پر اسی مقام پر چھوڑیں گی،پانچ ہزار سکھ یاتریوں کو روزانہ طعام، قیام ، علاج معالجہ کی مفت سہولیات پاکستان سکھ گوردوارہ پربندھک کمیٹی ، متروکہ وقف املاک بورڈ کی معاونت سے فراہم کرے گی ،سکھ یاتریوں کو ایک یوم کا کھانا فراہم کرنے پر تقریبا 10لاکھ روپے خرچ ہوں گے، ایک سکھ یاتری کا فی کس200 روپے تخمینہ لگایا گیا ہے ، منشیات کی روک تھام اور چیکنگ کی غرض سے انٹی نارکوٹکس کا خصوصی کاونٹر بھی بنایا گیا ہے ،کرتار پور ٹرمینل پر امیگریشن، ایف آئی اے ، نادرا، کسٹمز کے اہلکار تعینات ہوں گے، کرتار پور ٹرمینل کی سیکورٹی مستقل بنیادوں پر رینجرز کے سپرد ہو گی، تاہم گوردوارے کے انٹرنل حوالے سے متروکہ وقف املاک بورڈ کے گارڈز بھی تعینات ہوں گے۔