پارٹی فیصلہ کرے تو نشستوں سے استعفیٰ بھی دے سکتے ہیں: سرداراخترمینگل

جب حکومت کو ضرورت ہوتی ہے تو خود دوڑے چلے آتے ہیں، اپوزیشن سنجیدہ نہیں ورنہ حکومت ایسے بے لگام نہ ہوتی: سربراہ بی این پی مینگل

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ اتوار دسمبر 14:43

پارٹی فیصلہ کرے تو نشستوں سے استعفیٰ بھی دے سکتے ہیں: سرداراخترمینگل
اسلام آباد (اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔08دسمبر2019ء) : سربراہ بی این پی مینگل سرداراخترمینگل نے کہا ہے کہ حکومت نے ترمیم کیلئے ابھی تک ان کی جماعت سے کوئی رابطہ نہیں کیا ہے۔ سردار اختر مینگل نے کہا ہے کہ کہ اگر کسی کو خوش کرنے کیلئے ترمیم ہو سکتی تو ہمارے نکات پر کیوں نہیں ہو سکتی۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ پہلے لاپتا افراد تھے اب بات لاپتا خواتین تک پہنچ گئی ہے، کسی گھرمیں مجرم ہوتواس کامطلب یہ نہیں کہ خواتین بھی ملوث ہیں،سرداراخترمینگل کا کہناہے کہ پاکستان کو تباہی کے دہانے پر پہنچانے والا عدالت کے طلب کرنے پر بھی نہیں آتا، سیاسی لوگ پیش نہ ہوں تووارنٹ جاری ہو جاتے ہیں، اگرمشرف کی یہ خدمت ہے توانہیں تمغہ شجاعت ملناچاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پارٹی فیصلہ کرے تو نشستوں سے استعفا بھی دے سکتے ہیں، جب حکومت کو ضرورت ہوتی ہے تو خود دوڑے چلے آتے ہیں، اپوزیشن سنجیدہ نہیں ورنہ حکومت ایسے بے لگام نہ ہوتی۔

(جاری ہے)

سردار اختر مینگل نے مزید کہا کہ حکومت سے لو اور دونہیں کررہے ہیں، 6 نکات پرعملدرآمد چاہتے ہیں،اگرحکومت عمل نہیں کرسکتی تو بیگانی شادی میں عبداللہ دیوانہ کیوں بنے، سربراہ بی این پی نے کہا کہ حکومت نے ترمیم کیلئے ابھی تک کوئی رابطہ نہیں کیا،کسی کوخوش کرنے کیلئے ترمیم ہوسکتی توہمارے نکات پرکیوں نہیں،حکومت پہلے ترمیم پرحمایت لینے کیلئے ہمیں قائل کرے۔

بی این پی مینگل کے سربراہ سرداراخترمینگل نے مزید کہا کہ حکومت کو مزید مہلت دینے کاوقت گزرچکاہے،حکومت والے مجھ سے ملاقات کرناچاہتے ہیں تورزلٹ کےساتھ آئیں،انہوں نے کہاکہ پارٹی فیصلہ کرے تونشستوں سے استعفابھی دے سکتے ہیں،جلدسینٹرل پارٹی میٹنگ میں حتمی فیصلہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ  پارٹی فیصلہ کرے تو نشستوں سے استعفا بھی دے سکتے ہیں۔