Live Updates

چھوٹے بڑے ہسپتالوں کو حفاظتی اشیاء کی فراہمی کے عمل کو مزید تیز کیا جائے ،وزیراعلیٰ محمودخان

جمعرات مارچ 23:52

پشاور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 26 مارچ2020ء) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کورونا متاثرہ مریضوں کے علاج معالجے کیلئے ضروری نوعیت کے آلات اور خصوصاً طبی عملے کی حفاظت کے لئے حفاظتی اشیاء کی خریداری اور سپلائی کی صورتحال پر اب تک کی پیش رفت پراطمینان کا اظہار کرتے ہوئے محکمہ صحت کے حکام کو ہدایت کی ہے کہ صوبے کے تمام چھوٹے بڑے ہسپتالوں کو ان اشیاء کی فراہمی کے عمل کو مزید تیز کیا جائے اور اس عمل میں سرکاری امور کو نمٹانے کے روایتی طریقہ کار سے ہٹ کر کام کیا جائے ۔

کورونا کے مریضو ں کی علاج معالجے پر مامور طبی عملے کی حفاظت کواولین ترجیح قرار دیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم فرنٹ لائن پر کام کرنے والے طبی عملے کی تحفظ کے سلسلے میں کسی بھی قسم کی تاخیر کا متحمل نہیں ہو سکتے اوراس مقصد کے لئے درکار تمام وسائل فراہم کئے جائیں گے۔

(جاری ہے)

وہ جمعرات کے روز محکمہ صحت کے اعلیٰ حکام کے ایک اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔

اجلاس میں کورونا مریضوں کے علاج معالجے کیلئے درکار طبی آلات اور ان مریضوں کے علاج معالجے پر مامور طبی عملے کی تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے حفاظتی اشیاء کی خریداری اور صوبہ بھر کے ہسپتالوں کو ان اشیاء کی فراہمی پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا ۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ طبی عملے کی حفاظت کو یقینی بنانے کیلئے صوبے کے تمام اضلاع کو مجموعی طور پر 180,000 فیس ماسکس، 20,000 این95ماسکس، 6850 سرجیکل گاؤنز، 4325 گوگلز، 6116ہینڈ سینیٹائزر، 3310ہینڈ واش، 217,000 گلاؤز، 8,800ڈنگریز فراہم کئے گئے ہیں۔

مزید بتایا گیاکہ اِس وقت 600ملین روپے لاگت کے ضروری اشیاء اور طبی آلات کی خریداری کے آرڈرز جاری کئے جا چکے ہیں، جس میں سے اکثر اشیاء اور آلات مل بھی چکے ہیںاور ان اشیاء کی صوبے کے مختلف ہسپتالوں کو سپلائی کرنے کا عمل بھی ساتھ ساتھ جاری ہے۔ اجلاس کوآگاہ کیا گیا کہ صوبے کے ہائی رسک اضلاع کے ساتھ ساتھ دیگر اضلاع کو بھی طبی آلات اوربنیادی ضرورت کی دیگر اشیاء فراہم کی گئی ہے جبکہ خریداری اور سپلائی کے اس عمل میں دن بدن بہتری آتی جارہی ہے۔ وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ تمام ڈویژن کے چھوٹے بڑے ہسپتالوں کو ان اشیاء کی بلا تاخیر سپلائی کو یقینی بنانے کیلئے ڈویژنل سطح پر محکمہ صحت کے افسران خصوصی طور پر تعینات کئے گئے ہیں۔
کرونا وائرس کی تباہ کاریاں سے متعلق تازہ ترین معلومات