Live Updates

بورڈ آف انٹر میڈیٹ وثانوی تعلیم راولپنڈی نے ڈویژن میں16 مارکنگ سنٹرز کھول دیے

پیر جون 23:30

راولپنڈی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 29 جون2020ء) پنجاب حکومت کی طرف سے جاری نوٹیفیکیشن کی روشنی میں بورڈ آف انٹر میڈیٹ وثانوی تعلیم راولپنڈی نے تمام اضلاع( اٹک ،چکوال ،جہلم اورراولپنڈی) میں16 مارکنگ سنٹرز کھول دیے ہیں۔چیئرمین تعلیمی بورڈ راولپنڈی ڈاکٹر غلام دستگیر کے مطابق تمام مارکنگ سنٹرزنے باقاعدہ کام شروع کر دیا ہے۔

حکومتِ پنجاب کی طرف سے جاری کردہ نوٹیفکیشن COVID-19 کے ایس او پیز اورمارکنگ کی رازداری کے قوانین کے مطابق سختی سے عملدرآمد کروایا جائے گا۔ یہ بات انہوں نے ٹریننگ ورکشاپ سیشن میں افسران و متعلقہ عملے کی ٹریننگ کے دوران ہدایات جاری کرتے ہوئی کی ۔پہلے مرحلے میںافسران سے مخاطب ہوتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دورانِ چیکنگ مارکنگ سنٹرز آپ پریہ بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ نوٹیفکیشن اور مارکنگ کی ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنائیں،اگر ان میں کوئی کوتاہی یا نا اہلی سامنے آئے یا کسی مشکل کی صورت میں براہِ راست چیئرمین بورڈ، سیکرٹری بورڈ، کنٹرولر امتحانات اور ڈپٹی کنٹرولر سیکریسی کو مطلع کریں، تمام مارکنگ کا عملہ ایس او پیز پر عملدرآمد کا پابند ہو گا،کرونا علامات( بخار کھانسی یا سانس لینے میں دشواری) ظاہر ہونے کی صورت میں کسی کو مارکنگ سنٹر میں داخل ہونے کی اجازت نہ ہو گی، تمام عملہ صابن سے ہاتھ دھوئے گا، ہیند سینیٹائزر استعمال کرے ، ماسک اور گلوزکے استعمال کو یقینی بنائے، تمام سٹیشنری آئٹمز( پن، پنسل، پیمانہ وغیرہ) اپنا اپنا استعمال کریں، ایک وقت میں ایک ایگزامینر مارکنگ عملے سے بنڈل وصول کرے یا واپس کرے، ایگزامینر اور مارکنگ عملہ جوابی کاپیوں اور دستاویزات کالین دین گلوز اور ماسک پہن کر کرنے کا پابند ہے ، ایک دوسرے سے 6 فٹ کے فاصلے پر بیٹھیں،مارکنگ کے دوران چہرے ، آنکھوں اور ناک کو چھونے سے پرہیز کریں،اگر کوئی بھی ذمہ دار مارکنگ سنٹر میںایس او پیز پر عمل کرتا ہوا نظر نہ آیا تو اس کو فوری طور پر اس ذمہ داری سے الگ کر دیا جائے گا۔

(جاری ہے)

انھوں نے کہا کہ تعلیمی بورڈ راولپنڈی تمام ضروری اشیاء کی فراہمی یقینی بنائے گا ، تمام متعلقہ ذمہ داران ان تمام ہدایات پر عملدرآمد کے پابند ہوں گے،آخر میں چیئرمین تعلیمی بورڈ راولپنڈی ڈاکٹر غلام دستگیر نے کہا کہ مارکنگ کی سیکریسی ، شفافیت اور میرٹ کو ملحوظِ خاطر رکھا جائے تا کہ شاملِ امتحان ہونے والے کسی بھی امیدوار کی حق تلفی نہ ہو سکے۔مارکنگ نوٹیفکیشن کے ایس او پیز میں کوئی کوتاہی یا نا اہلی برداشت نہیں کی جائے گی، اگر کوئی اس میں ملوث پایا گیاتو اس کے خلاف سخت تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
پاکستان پر کرونا کی یلغار سے متعلق تازہ ترین معلومات