بچوں کی صحت پر کوئی سمجھوتا نہیں کریں گے، ایسا لگ رہا ہے اسکولوں کو بند کرانا پڑے گا، سعیدغنی

افسوس کی بات ہے کہ اب بھی اسکولز میں ایس اوپیز پرعمل نہیں ہو رہا،کل بھی اورنگی ٹائون میں 4 اسکولز سیل کئے ہیں، میڈیا سے گفتگو

جمعہ ستمبر 16:47

بچوں کی صحت پر کوئی سمجھوتا نہیں کریں گے، ایسا لگ رہا ہے اسکولوں کو ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 ستمبر2020ء) سندھ کے وزیر تعلیم سعید غنی نے کہاہے کہ بچوں کی صحت پر کوئی سمجھوتا نہیں کریں گے، ایسا لگ رہا ہے اسکولوں کو بند کرانا پڑے گا۔میڈیا سے بات چیت میں سعید غنی نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ اب بھی اسکولز میں ایس اوپیز پرعمل نہیں ہو رہا،کل بھی اورنگی ٹائون میں 4 اسکولز سیل کئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اسکولوں اور کالجز میں 13 ہزار طلبا کے کورونا ٹیسٹ کرائے گئے ہیں ،88طلبا میں کورونا مثبت آیا ہے، اگر محسوس ہوا کہ چیزیں درست سمت میں نہیں جارہیں تو اسکول بند کرنے میں دیر نہیں کریں گے۔

صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ جمعہ کو بھی اسکولوں کا دورہ کیا تو بچوں نے ماسک بھی نہیں پہنے تھے،سرکاری اسکولوں میں بھی ایس او پیزکی خلاف ورزیاں ہورہی ہیں،جبکہ کالجز میں ایس او پیز کی خلاف ورزیاں زیادہ نظر آئی ہیں۔

(جاری ہے)

این سی او سی اور وزیراعلی سے موجودہ صورتحال پر بات کروں گا۔اس سے قبل وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے جمعہ کی صبح نیوکراچی میں اسکولز کا دورہ کیا ، متعدد اسکولوں میں بارش کا پانی کھڑا ہوا تھا۔

اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ علاقہ نشیبی ہے اور پانی کی نکاسی کے لیے نالے پر تجاوزات ہیں،نالا اوورفلو ہونے کے باعث علاقے کا سیوریج کا نظام تباہ ہوگیا ہے، واٹربورڈ کا عملہ کام کررہا ہے۔سعید غنی نے کہاکہ نالے پر تجاوزات کے باعث صورتحال انتہائی خراب ہے، تجاوزات کے خاتمے اور سیوریج کے نظام کو فعال کرنے کیلئے اقدامات شروع کر دیئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ماضی میں یہاں تجاوزات قائم کروا کرپورے نالے کو بند کر دیا گیاتھا۔