وزیراعظم عمران خان کے دوست نووجوت سنگھ سدھو کو بھارتی پنجاب کا وزیراعلیٰ بنا دیے جانے کا امکان

بھارتی پنجاب کے موجودہ وزیراعلیٰ امریندر سنگھ نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا، نئے وزیر اعلیٰ کے نام کا اعلان آئندہ چند روز میں متوقع

muhammad ali محمد علی اتوار 19 ستمبر 2021 01:03

وزیراعظم عمران خان کے دوست نووجوت سنگھ سدھو کو بھارتی پنجاب کا وزیراعلیٰ ..
نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 ستمبر2021ء) وزیراعظم عمران خان کے دوست نووجوت سنگھ سدھو کو بھارتی پنجاب کا وزیراعلیٰ بنا دیے جانے کا امکان۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ نے کانگریس پارٹی میں اختلافات کے باعث مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا۔

امریندر سنگھ نے موقف اختیار کیا کہ وہ اپنی تضحیک محسوس کر رہے تھے، اس لیے انہوں نے کانگریس پارٹی کے ایک اجلاس کے دوران اپنا استعفیٰ پیش کر دیا۔ امریندر سندھ نے استعفیٰ دینے سے قبل کانگریس کی سربراہ سونیا گاندھی سے ٹیلیفون پر رابطہ کر کے آگاہ کیا کہ وہ اپنے عہدے سے مستعفی ہو رہے ہیں۔ امریندر سنگھ کے مستعفیٰ ہونے کے بعد نووجوت سنگھ سدھو کو بھارتی پنجاب کا نیا وزیراعلیٰ بنا دیے جانے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

(جاری ہے)

جبکہ اس حوالے سے مودی نواز میڈیا نے فوری ہی پراپیگنڈا بھی شروع کر دیا۔ بھارتی میڈیا کی جانب سے پراپیگنڈا کیا جا رہا ہے کہ چونکہ نووجوت سنگھ سدھو پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کے دوست ہیں، اس لیے اگر وہ وزیر اعلیٰ بن گئے تو پاکستان نواز پالیسیاں اختیار کریں گے۔ جبکہ مستعفی ہونے والے امریندر سنگھ نے بھی ہرزہ سرائی کرتے ہوئے کہا ہے کہ چونکہ نووجوت سنگھ سدھو پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کے دوست ہیں، اس لیے اگر انہیں وزیرراعلیٰ بنانے کا فیصلہ کیا گیا تو وہ اس کی مخالفت کریں گے۔

یہاں یہ واضح رہے کہ نووجوت سنگھ سدھو نے وزیراعظم عمران خان کی دعوت پر کرتارپور راہداری منصوبے کی افتتاحی تقریب میں شرکت کی تھی اور دل کھول کر وزیراعظم اور آرمی چیف سمیت پاکستان کی بھی تعریف کی تھی۔ اسی وجہ سے مودی نواز میڈیا نے نووجوت سنگھ سدھو کیخلاف کردار کشی مہم شروع کی جو اب تک جاری ہے۔